قومی اسمبلی کے بعد کے پی کے میں تو تو میں میں ، سندھ میں نصرت سحر نے ایجنڈا پھاڑدیا

قومی اسمبلی کے بعد کے پی کے میں تو تو میں میں ، سندھ میں نصرت سحر نے ایجنڈا ...
 قومی اسمبلی کے بعد کے پی کے میں تو تو میں میں ، سندھ میں نصرت سحر نے ایجنڈا پھاڑدیا

  

پشاور(مانیٹرنگ ڈیسک) قومی اسمبلی میں دھینگا مشتی کے بعدمسلم لیگ (ن)اور تحریک انصاف خیبر پختونخوا اسمبلی میں بھی آمنے سامنے کھڑی ہو گئیں۔ لیگی رکن اورنگزیب نلوٹھا اور کے پی کے حکومت کے ترجمان مشتاق غنی کے درمیان گرما گرمی کے باعث اسمبلی مچھلی منڈی بن گئی ۔تفصیلات کے مطابق خیبر پختونخوا اسمبلی کا اجلاس سپیکر اسد قیصر کی صدارت میں شروع ہوا تو مسلم لیگ ن کے اپوزیشن لیڈر اورنگزیب نلوٹھا نے بحث کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا پرویز خٹک فنڈز غیر منصفانہ طریقے سے تقسیم کر رہے ہیں اور ہمیں مکمل طور پر نظرانداز کر رہے ہیں جو کہ زیادتی ہے۔حکومتی ترجمان مشتاق غنی نے جواب دیا کہ حکومت اپوزیشن کو فنڈز دے گی جس پر دونوں ایم پی ایز کے درمیان گرما گرمی ہو گئی اور دونوں سپیکر کے ڈائس کے سامنے آ گئے۔ اس دوران ان میں تلخ جملوں کا تبادلہ ہوا اور ایوان مچھلی منڈی بن گیا۔

ایوان مچھلی منڈی

کراچی( مانیٹرنگ ڈیسک) پنجاب پانی کے معاملے میں ہمارے ساتھ زیادتی کر رہا ہے،نصرت سحر عباسی نے سندھ اسمبلی میں ایجنڈے کی کاپی پھاڑ دی،نجی ٹی وی کے مطابق سندھ اسمبلی کا اجلاس ڈپٹی سپیکر سیدہ شہلا رضا کی زیر صدارت جاری ہے،اجلاس میں پنجاب سے پانی کے معاملے پر بحث جاری ہے،مسلم لیگ فنکشنل کی رکن اسمبلی نصرت سحر عباسی نے بحث چھیڑی توشہلا رضا نے ان کو چیمبر آنے کی دعوت دے دی،شہلا رضا نے رکن اسمبلی کو خاموش رہنے کا کہا تو انہوں اجلاس ایجنڈے کی کاپی پھاڑ دی ،بعد میں معذرت کرلی، نصرت سحر عباسی نے کہا ہے کہ پنجاب پانی کے معاملے میں ہمارے ساتھ زیادتی کر رہا ہے۔انہوں نے کہا ہے کہ 1991 کے معاہدے پربات ہو رہی ہے،ایساکوئی اورمعاہدہ کیوں ہوا، اگر پانی ملاتوسندھ مزیدطاقتورہوجائیگا،پنجاب اس سے ڈرتا ہے، پنجاب پانی کے معاملے میں ہمارے ساتھ زیادتی کر رہا ہے۔انہوں نے کہا ہے کہ وزیراعلیٰ صاحب آپ وفاق میں جاکر اپنا کردار اداکریں، پنجاب پانی کے معاملے میں ہمارے ساتھ زیادتی کر رہا ہے،ذوالفقارعلی بھٹو نے پاکستان کے خلاف معاہدے کو پھاڑدیاتھا۔

نصرت سحر

اسلام آباد(آئی این پی)پاکستان تحریک انصاف کے رہنما شہر یار آفریدی قومی اسمبلی کے اجلاس کیلئے ’’اجنبی‘‘ نکلے ‘ رکنیت کی معطلی کے باوجود قومی اسمبلی کے اجلاس میں شرکت پر سپیکر قومی اسمبلی نے تحقیقات کا حکم جاری کر دیا ۔ الیکشن کمیشن آف پاکستان بھی اس معاملے پر کارروائی کر سکتا ہے۔ جمعرات 26 جنوری کو تحریک انصاف کے شہر یار آفریدی اجلاس میں شرکت کیلئے ایوان میں آئے تو سپیکر کے معاون عملے نے سٹاف کو دوبار شہر یار آفریدی کے پاس بھیجا کہ الیکشن کمیشن میں اثاثوں کے سالانہ گوشوارے جمع نہ کرانے پر تاحال ان کی رکنیت معطل ہے۔ تحریک انصاف کے رکن کیلئے بلواسطہ طور پر پیغام تھا کہ وہ ایوان میں ’’اجنبی‘‘ ہیں اور اٹھ کر باہر چلے جائیں تاہم انہوں نے اس پیغام کو نظر انداز کر دیا تھا۔ جمعہ کو میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے سپیکر سردار ایاز صادق نے شہر یار آفریدی کی رکنیت معطل ہونے کی تصدیق کی اور کہا کہ انہیں بعد میں صورتحال سے آگاہی ہوئی اس وقت تک ایوان میں بدمزگی کی وجہ سے اس معاملے کا نوٹس نہ لے سکے۔ سپیکر نے واضح کیا کہ 26 جنوری جمعرات کو شہر یار آفریدی ایوان میں ’’اجنبی‘‘ تھے۔ اگر ان کی رکنیت بحال ہوئی ہوتی تو قومی اسمبلی سیکرٹریٹ کو تاحال باضابطہ طور پر کسی قسم کا نوٹیفکیشن موصول نہیں ہوا ہے۔ شہر یار آفریدی ہاؤس کیلئے ’’اجنبی‘‘ تھے میں نے تحقیقات کا حکم دیدیا ہے۔

تحقیقات کا حکم جاری

مزید :

صفحہ اول -