ایوان کا ماحول خراب کرنیوالے رکن کو روکنے کیلئے سپیکر ’’ بااختیار‘‘

ایوان کا ماحول خراب کرنیوالے رکن کو روکنے کیلئے سپیکر ’’ بااختیار‘‘

  

لاہور(نمائندہ خصوصی ) سپیکر قومی اسمبلی کو اسمبلی کے رولز آف پروسیجرز اس بات کا مکمل اختیار دیتے ہیں کہ وہ ایوان کی کارروائی میں خلل ڈالنے والے کسی بھی رکن اوران کی اجازت کے بغیر کسی بھی ایشو پر بات کرنے والے اور ان کی بات نہ ماننے والے رکن کو جتنے وقت تک کے لئے چاہیں ایوان کی کاروائی سے روک سکتے ہیں یہ بھی سپیکر کا اختیار ہے کہ وہ مذکورہ رکن پر پانچ منٹ،ایک دن یا وہ اجلاس جس کے دوران مذکورہ رکن نے کوئی ایسا ایکٹ کیا ہو جو کہ سپیکر کو نا پسند آیا ہو تو وہ مذکورہ رکن کو اسمبلی کی خصوصی سکیورٹی کے ذریعے بھی باہر بھجوانے کا مکمل اختیار رکھتے ہیں پابندی کو بڑھانے اور کم کرنے سمیت تمام تر اختیارات اسمبلی کے رولز آف پروسیجر کے مطابق سپیکر کے ہی پاس ہوتے ہیں ۔تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز قومی اسمبلی میں حکومتی اور اپوزیشن پی ٹی آئی ارکان کے درمیان ہونے والی ہاتھا پائی کے بارے میں سپیکر کی جانب سے فوری طور پر ان کے صوابدیدی اختیارات نہ استعمال کرنے کے حوالے سے رولز آف پروسیجرز کا جائزہ لیا گیا تو یہ بات سامنے آئی کہ سپیکر کے پاس اختیارات ہوتے ہیں کہ وہ ایوان کا ماحول خراب کرنے والوں کو جتنے وقت تک کے لئے چاہیں ایوان سے باہر نکال دیں ۔پنجاب اسمبلی کے رولز آف پروسیجرز کے رولز 210کے تحت سپیکر ایوان کے اندر لڑائی کرنے والے رکن کو ایوان کی کاروائی سے پندرہ دنوں کے لئے نکالنے کا مکمل اختیار رکھتے ہیں ۔

سپیکر با اختیار

مزید :

صفحہ اول -