چین نے پاکستان کو ایٹم بم کا ڈیزائن اور اسے بنانے کیلئے ضروری مواد فراہم کیا: سی آئی اے

چین نے پاکستان کو ایٹم بم کا ڈیزائن اور اسے بنانے کیلئے ضروری مواد فراہم کیا: ...
چین نے پاکستان کو ایٹم بم کا ڈیزائن اور اسے بنانے کیلئے ضروری مواد فراہم کیا: سی آئی اے

  

نئی دہلی (ڈیلی پاکستان آن لائن) سی آئی اے کی حال ہی میں منظرعام پر آنے والی خفیہ دستایوزات میں پاکستان اور چین کے درمیان عسکری تعلقات دہائیوں کے دوران بننے کی گواہی دی گئی ہے اور اس پر بھی روشنی ڈالی گئی ہے کہ کس طرح بیجنگ نے پاکستان کے ایٹمی پروگرام کو فروغ دینے کیلئے امریکہ کیساتھ اپنے ایٹمی تعاون کو داﺅ پر لگا دیا تھا۔

وزارت داخلہ نے ایان علی کا نام ای سی ایل سے نکالنے کا سندھ ہائیکورٹ کا فیصلہ سپریم کورٹ میں چیلنج کر دیا

دستاویزات میں کہا گیا ہے کہ امریکہ نے یہ نوٹ کیا کہ ایٹمی معاہدے پر دستخط کے بعد چین نے پاکستان کو یہ نہیں کہا تھا کہ انٹرنیشنل اٹامک انرجی ایجنسی (آئی اے ای اے) کو اپنی تنصیبات کی تحقیقات کرنے دے۔ معاہدے کا متن کافی تسلی بخش تھا، جس میں غیر فوجی ایٹمی تعلقات، ریڈیو آئیسو ٹاپس، طبی تحقیق اور سویلین توانائی کی ٹیکنالوجی پر توجہ دی گئی تھی۔

اس سے امریکہ نے یہ نوٹ کیا کہ چین پاکستان کے غیر حساس علاقوں میں نیوکلیئر برآمدات کی مارکیٹ بنانا چاہتا ہے۔اس سے امریکہ جیسے ممالک کے پاکستان کے ایٹمی ڈیزائن پر موجود خدشات دور ہو سکتے تھے۔ ”ہم اس امکان کو مسترد نہیں کر سکتے کہ شائد چین یہ محسوس کرتا تھا کہ پاکستان کے غیر حساس علاقوں میں آئی اے ای اے کے حفاظتی اور دھندلے پردے کے پیچھے خفیہ تعاون کرنا آسان ہو گا۔“

1983-84ءمیں امریکہ پر یہ خطرناک طریقے سے واضح ہو گیا تھا کہ چین اور پاکستان کے درمیان ایٹمی تعاون بہت ہی گہرا ہو گیا ہے۔ فروری 1983ءمیں امریکی کانگریس کی ایک کمیٹی کو سی آئی اے نے آگاہی دی کہ امریکہ کے پاس اس بات کے ثبوت موجود ہیں کہ پاکستان اور چین ایٹمی ہتھیار بنانے والوں سے بات چیت کر رہے ہیں۔

وہ وقت جب پاکستان کی اسمبلی میں ڈپٹی سپیکر کو ہی قتل کردیا گیاتھا، پارلیمانی تاریخ کا سب سے افسوسناک واقعہ

سی آئی اے نے یہ بھی کہا کہ وہ جانتے ہیں کہ چین نے ایک ایٹم بم کا ڈیزائن بھی پاکستان کے حوالے کیا ہے جس کا تجربہ لوپ نور میں ہوا تھا اور یہ حادثاتی طور پر چین کا چوتھا ایٹمی تجربہ تھا۔ امریکہ کا ماننا ہے کہ اس تجربے کے وقت پاکستان کا ایک اعلیٰ افسر بھی وہاں موجود تھا۔

امریکہ کو یہ شک ہے کہ چین نے پاکستان کو افزودہ یورینیم بھی فراہم کی اور بنیادی طور پر اس کا مطلب ہے کہ چین نے ناصرف پاکستان کو ایٹم بم کا ڈیزائن دیا بلکہ اسے بنانے کیلئے ضروری مواد بھی فراہم کیا۔

مزید :

قومی -اہم خبریں -