”تم باﺅلنگ ٹھیک نہیں کروا رہے، میری گیندوں پر کیچ کیوں چھوٹتے ہیں، عماد کے ’ابو‘ مکی آرتھر۔۔۔“

”تم باﺅلنگ ٹھیک نہیں کروا رہے، میری گیندوں پر کیچ کیوں چھوٹتے ہیں، عماد کے ...
”تم باﺅلنگ ٹھیک نہیں کروا رہے، میری گیندوں پر کیچ کیوں چھوٹتے ہیں، عماد کے ’ابو‘ مکی آرتھر۔۔۔“

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) دورہ آسٹریلیا کے دوران بدترین پرفارمنس کی وجہ بری کارکردگی کو قرار دیا جا رہا تھا لیکن اب کھلاڑیوں کے درمیان شدید گرما گرمی اور الزامات کا معاملہ بھی منظرعام پر آ گیا ہے جس سے ہر کوئی سوچنے پر مجبور ہو گیا ہے کہ کہیں بدترین کارکردگی کی وجہ اختلافات ہی تو نہیں ہیں۔

تفصیلات کے مطابق آسٹریلیا کے خلاف میچ ہارنے کے بعد ڈریسنگ روم میں میٹنگ کا انعقاد کیا گیا تو تمام کھلاڑیوں کے درمیان شدید بحث ہوئی اور معاملہ انتہائی گرما گرمی پر پہنچ گیا جس کے بعد کھلاڑیوں نے ایک دوسرے پر الزامات کی بھی خوب بوچھاڑ کی۔

میٹنگ کے دوران اسد شفیق کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے ان پر الزام عائد کیا گیا کہ وہ ٹیلنٹ کی بنیاد پر نہیں بلکہ دوستی کی بنیاد پر ٹیم میں شامل ہیں جبکہ محمد عامر کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا گیا کہ ”تم تو اپنے لئے کھیلتے ہو۔ معاملہ یہیں ختم نہ ہوا بلکہ محمد عامر نے بھی اپنے تحفظات کا اظہار کیا اور ترکی بہ ترکی جواب دیتے ہوئے کہا کہ میری گیندوں پر کیچ کیوں چھوٹتے ہیں۔

ذرائع کے مطابق بہت سے کھلاڑیوں نے وہاب ریاض کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا تم ٹھیک باﺅلنگ نہیں کرا رہے جس پر وہاب ریاض نے جواب دیا کہ ”میں تھک چکا تھا۔“ تنازعات کم لطیفوں کے باعث میڈیا میں رہنے والے عمر اکمل بھی کسی سے کم نہیں ہیں۔ ان سے سوال کیا گیا کہ تم کیسے بیٹنگ کر رہے ہو؟ تو انہوں نے جواب دیا کہ جیسی بیٹنگ مجھے آتی ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ عماد وسیم کو ہیڈ کوچ مکی آرتھر نے اپنا منہ بولا بیٹا بنا رکھا ہے جس پر کئی کھلاڑی نالاں ہیں اور عماد وسیم کو کوچ کا بیٹا اور کوچ کو عماد کا ابو کہہ کر چھیڑا جاتا ہے۔ ٹیم میٹنگ کے دوران کھلاڑیوں کی جانب سے ایسا رویہ منظرعام پر آنے کے بعد کرکٹ ماہرین نے تحفظات کا اظہار کیا ہے اور کہا ہے وہ لڑکے جنہوں نے ایک ٹیم بن کر مخالف کے خلاف میدان میں اترنا ہوتا ہے، اگر ان کے تعلقات اس طرح کے ہوں گے تو کارکردگی بھی ایسی ہی ہو گی۔

مزید :

کھیل -اہم خبریں -