کیا آپ کو معلوم ہے 9/11 حملے کرنے والے 19 لوگوں کا تعلق کن کن ممالک سے تھا؟ جان کر آپ کو بھی حیرت ہوگی کہ پاکستان اس معاملے میں کیسے پھنس گیا

کیا آپ کو معلوم ہے 9/11 حملے کرنے والے 19 لوگوں کا تعلق کن کن ممالک سے تھا؟ جان کر ...
کیا آپ کو معلوم ہے 9/11 حملے کرنے والے 19 لوگوں کا تعلق کن کن ممالک سے تھا؟ جان کر آپ کو بھی حیرت ہوگی کہ پاکستان اس معاملے میں کیسے پھنس گیا

  

واشنگٹن (مانیٹرنگ ڈیسک) دہشت گردی کے خلاف امریکا کی نام نہاد جنگ کا آغاز 9/11 کے خوفناک حملے کے بعد ہوا، جس کا ذمہ دار القائدہ کو قرار دیا گیا، لیکن اس جنگ کے شعلوں نے پاکستان کو جتنا نقصان پہنچایا شاید ہی کسی اور ملک کو ایسے نقصان کا سامنا کرنا پڑا ہو۔ گزشتہ ایک دہائی کے دوران پاکستان ایک جانب دہشت گردی کی لپیٹ میں رہا تو دوسری جانب امریکی ڈرون دہشت گردوں کے تعاقب کے نام پر ہماری خودمختاری کی خلاف ورزی کرتے رہے، اور ستم ظریفی دیکھئے کہ الٹا دہشت گردی کا الزام بھی پاکستان پر ہی لگتا رہا۔ حقیقت یہ ہے کہ خود امریکا نے جن ہائی جیکروں کو 9/11 دہشتگردی کا ذمہ دار قرار دیا ان میں سے کسی کا بھی پاکستان سے دور، دور کا واسطہ نہ تھا۔

ویب سائٹ وکی پیڈیا کے مطابق 9/11 حملے میں ملوث تمام 19 افراد القاعدہ سے وابستہ تھے اور ان میں سے 15کا تعلق سعودی عرب سے، دو کا متحدہ عرب امارات سے، ایک کا مصر سے اور ایک کا لبنان سے تھا۔ رپورٹ کے مطابق ان ہائی جیکروں کو چار ٹیموں میں تقسیم کیا گیا تھا جن میں سے ہر ایک کی سربراہی تربیت یافتہ پائلٹ ہائی جیکر کے پاس تھی، جبکہ اس کے ساتھی تین یا چار ہائی جیکروں کو پائلٹوں، فضائی عملے اور مسافروں پر قابو پانے کی تربیت فراہم کی گئی تھی۔

’185 ایٹم بموں کی طاقت کے برابر ایک دھماکہ۔۔۔‘

حملہ آور دو ہائی جیکر خالد المہدار اور نواف الہذمی سب سے پہلے امریکہ پہنچے۔ وہ 2000ءمیں سان ڈیاگو کاﺅنٹی اور کیلیفورنیا میں مقیم ہوئے۔ ان کے بعد تین ہائی جیکر پائلٹ محمد عطائ، مروان الشیہی اور زیاد جراح 2000ءکے نصف میں ہوابازی کی تربیت لینے کے لئے جنوبی فلوریڈا پہنچے۔ چوتھا ہائی جیکر پائلٹ ہانی ہنجور دسمبر 2000ءمیں سان ڈیاگو پہنچا۔ باقی تمام اگلے سال کے وسط تک امریکہ پہنچے۔

امریکی سکیورٹی اداروں کا کہنا ہے کہ ان تمام ہائی جیکروں کی تربیت اور امریکہ میں قیام کے لئے اخراجات القاعدہ نے فراہم کئے۔ ان کی ابتدائی تربیت افغانستان کے ٹریننگ کیمپوں میں ہوئی، جس کے بعد القاعدہ کے سربراہ اسامہ بن لادن اور القاعدہ ملٹری ونگ نے انہیں امریکہ میں حملوں کے لئے منتخب کیا۔ ان کے انتخاب میں مغربی کلچر سے ان کی گہری واقفیت کو ملحوظ خاطر رکھا گیا۔

11 ستمبر کے دن ان ہائی جیکروں نے تین طیارے ہائی جیک کئے، جن میں امریکن ائیرلائنز کی پرواز 11، یونائیٹڈ ائیرلائنز کی پرواز 175 اور امریکن ائیرلائن کی ہی پرواز 77شامل تھی۔ پہلا طیارہ، امریکن ائیرلائنز کی پرواز 11 ورلڈ ٹریڈ سنٹر کے شمالی ٹاور سے ٹکرایا، دوسرا طیارہ، یونائیٹڈ ائیرلائنز کی پرواز 175 ورلڈ ٹریڈ سنٹر کے جنوبی ٹاور سے ٹکرایا جبکہ امریکن ائیرلائن کی پرواز 77پینٹاگون سے جاٹکرائی۔ یونائیٹڈ ائیرلائن کی پرواز 93 بھی ہائی جیک ہوئی لیکن یہ بظاہر کسی ہدف تک نہ پہنچ پائی۔

مزید :

بین الاقوامی -