ڈی جی فوڈ اتھارٹی نے گھروں میں فراہم کیے جانے والے پینے کے پانی کے ٹیسٹ کروانے کاحکم دے دیا

ڈی جی فوڈ اتھارٹی نے گھروں میں فراہم کیے جانے والے پینے کے پانی کے ٹیسٹ ...
ڈی جی فوڈ اتھارٹی نے گھروں میں فراہم کیے جانے والے پینے کے پانی کے ٹیسٹ کروانے کاحکم دے دیا

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)ڈی جی پنجاب فوڈ اتھارٹی نورا لامین مینگل نے تمام شہروں میں فوڈ اتھارٹی ٹیموں کی ہدایت کی ہے کہ واسا اور دیگر سرکاری ذرائع سے فراہم کیے جانے والے پینے کے پانی کے سیمپل لے کر لیبارٹری تجزیے کے لیے بجھوائے جائیں، کسی بھی علاقے میں پانی کے ناقص ہونے کی صورت میں علاقہ مکینوں اور متعلقہ حکام کو مطلع کیا جائے گا۔

نجی خبر رساں ادارے ’’صباح ںیوز‘‘ کے مطابق ڈی جی فوڈ اتھارٹی اتھارٹی پنجاب نور الامین مینگل  کا کہنا ہے کہ عوام تک صاف پانی کی فراہمی یقینی بنانے کے لیے’’  پنجاب صاف پانی کمپنی‘‘  تشکیل دی چکی ہے جو   فوڈ اتھارٹی کے ساتھ مل کر وزیر اعلیٰ پنجاب کے ویژن کی تکمیل کے لیے کام کر تی رہے گی ،صاف پانی انسانی صحت کے لیے ناگزیر ہے،کسی بھی علاقے میں ناقص پانی ہونے کی صورت میں علاقہ مکینوں اور متعلقہ حکام کو مطلع کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ  وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کی ہدایت پر صحت مند اور میعاری خوراک کی فراہمی یقینی بنانے کے لیے پنجاب فوڈ اتھارٹی پوری طرح متحرک ہے اور صوبہ بھر میں ملاوٹ مافیا کے خلاف کاروائیاں تیزی سے جاری ہیں ۔دوسری طرف پنجاب فوڈ اتھارٹی نشتر ٹاون کی ٹیم نے گورمے فوڈز کوٹ لکھپت کا دورہ

 کر تے ہوئے دی گئی ہدایات پر عمل کرنے کی توثیق کی اور اشیاء کی تیاری کی اجازت دے دی ۔باگڑیاں میں طیب ٹاون میں واقع جاوید بیکری کو کیڑوں کی روک تھام کے ناقص انتظامات،ناقص جسمانی صورتحال،پائوں کی سطح پر اشیاء خورونوش کو رکھنے اور روشنی کی کمی کے باعث 3000 روپے جرمانہ عائد کیا۔نیا پُل تاجپورہ میں مندرجہ ذیل دکانوں میں احکامات جاری کیے ،بسم اللہ پان شاپ،داتا پان شاپ،حسین پان شاپ اور نیو پاک سویٹس اینڈ بیکرز کو  اشیاء کو ڈھانپنے کی ہدایات بھی جاری کیں ۔فارماجین واٹر شاپ ، پاکستان منٹ کو دوبارہ چیک کیا او ر ایگزاسٹ فین کی تنصیب،ہاتھ دھونے کیلئے بیسن اورروشنی کو جذب نہ کرنے والی پینٹ اور روشنی کا معیار کی ہدایات پر عمل درآمد کی تصدیق کی۔ڈیفنس روڈ بھوبھتیاں چوک میں واقع پریمئیر ڈیریزکا دورہ کیا ،رات کے وقت لیے گئے نمونہ جات کو آئس باکس کی عدم دستیابی اور درست طریقے سے نہ رکھنے کی بنا پر ضائع کر دیا گیا ،کافی اور پستہ آئس کریم کے نمونہ جات کو دوبارہ حاصل کیا گیا اور لیبارٹری تجزیے کے لیے بھجوا دیا۔

مزید :

لاہور -