پانی کی کمی ملکی رزاعت اورصنعت کیلئے بڑا خطرہ ، کاشف حسین گوہر

پانی کی کمی ملکی رزاعت اورصنعت کیلئے بڑا خطرہ ، کاشف حسین گوہر

لاہور (کامرس رپورٹر)پاکستان پبلشرز ایسوسی ایشن کے مرکزی رہنماء و یو سی چیئر مین کاشف حسین گوہرنے کہا ہے کہ ملک میں پانی کمی تشویشناک حد تک بڑھ گئی ہے جو پاکستان کی رزاعت اورصنعت کیلئے ایک بڑا خطرہ ہے ۔ دینا میں پاکستان کی پہچان ایک بڑے زرعی ملک کی ہے ۔ پاکستان سے سالانہ145ملین ایکڑفٹ پانی گزر کر سمندر کی نظر ہو جا تا ہے۔ دیا میر بھاشا اورکالا باغ ڈیم ضائع شدہ پانی کو ذخیرہ کرنے کا سب سے بڑا موجب ہیں جبکہ کالا باغ ڈیم کی تعمیر سے سے اڑھائی روپے لاگت والی3600میگا واٹ سستی بجلی حاصل ہوگی اس لیے حکومت کو چائیے کہ کالا باغ ڈیم کی تعمیر کیلئے اس کی راہ میں حائل رکاوٹیں اور اختلافات ختم کروانے کیلئے ہنگامی بنیادوں پر کام کریں کیونکہ مہنگی بجلی سے صنعتکار و تاجر طبقہ انتہائی پریشانی کا شکار ہے ۔ کالا باغ ڈیم اور دیا میر بھاشا ڈیم سے سستی بجلی کے علاوہ سارا سال دریاؤں میں زراعت کے لیے پانی دستیاب رہے گا اور خام مال وافر ملنے سے صنعتیں ترقی کرینگے اور ملک میں روزگار کے وافر مواقع فراہم ہونگے ۔کاشف حسین گوہر نے کہا کہ کالا باغ ڈیم کی تعمیر ہی ملک کو دوبارہ اندھیروں سے روشنیوں کی طرف گامزن کرسکتی ہے اور اس کی تعمیر سے حکومتی صنعتی ترقی کا ویژن بھی مکمل ہوگا۔انہوں نے کہا کہ پانی کے بحران پر قابو پانے کے لئے دیا میر بھاشا اور کالا باغ ڈیم نہ بنائے گئے تو زعی زرعی شعبہ تباہ ہو جائے گا۔ جس سے ہمار ی آنے والی نسلوں کو پانی کی قلت کا سامنا کر نا پڑے گا۔

مزید : کامرس