قومی ادارہ برائے وقار نسواں نے پہلے ادبی ایوارڈ کا اعلان کردیا، خواتین مصنفین سے 8مارچ تک تحریریں طلب

قومی ادارہ برائے وقار نسواں نے پہلے ادبی ایوارڈ کا اعلان کردیا، خواتین ...

رحیم یارخان(ڈسٹرکٹ رپورٹر)قومی ادارہ برائے وقار نسواں نے پہلے ادبی ایوارڈ کا اعلان کر دیا، خواتین کے حوالے سے لکھنے والی مصنفین سے 8 مارچ تک تحریریں طلب کر لی گئیں۔ (بقیہ نمبر30صفحہ12پر )

تفصیل کے مطابق نیشنل کمیشن آن دی اسٹیٹس آف ویمن کی جانب سے پہلے ادبی ایوارڈ 2018ء کا اعلان کر دیا گیا ہے جس کے تحت خواتین کے لئے آواز اٹھانے والی خواتین مصنفین کی حوصلہ افزائی کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ اس سلسلہ میں 35برس تک کی عمر کی خواتین کے لئے لکھنے والی خواتین مصنفین کو ذاتی اور غیر شائع شدہ قومی زبان اردو و علاقائی زبان پر مشتمل تحریروں کی چار ، چار فوٹوکاپیاں قومی ادارہ برائے وقار نسواں کو 8 مارچ تک ارسال کرنے کی ہدایت کی گئی ہے ۔ ادارہ کی جانب سے تشکیل دی جانے والی کمیٹی سال 2018ء کی دو بہترین تحریروں کو ایوارڈ کے لئے منتخب کرے گی ، کامیاب قرار پانے والی تحریروں کی خواتین مصنفین کو مالی انعام دیا جائے گا اور ان کی تحریریں کتابی شکل میں بھی شائع کی جائیں گی ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر