سخا کوٹ،ٹمبر ایسوسی ایشن کی لکڑی کی سپلائی بند کرنے کیخلاف 3دن کی ڈیڈ لائن

سخا کوٹ،ٹمبر ایسوسی ایشن کی لکڑی کی سپلائی بند کرنے کیخلاف 3دن کی ڈیڈ لائن

سخاکوٹ(نمائندہ پاکستان) ٹمبر مارکیٹ درگئی کو لکڑی کی سپلائی بندش کے خلاف ٹمبر ایسوسی ایشن درگئی نے تین دن کا ڈید لائین دیتے ہوئے 31جنوری سے مین چوک درگئی بازار میں لکڑی کی سپلائی تک مسلسل دھرنے کااعلان کردیا۔ محکمہ فارسٹ کے سیکرٹری،اعلیٰ حکام، ملاکنڈ انتظامیہ، قانون نافظ کرنے والے اداروں سمیت ہر در پر دستک دی شنوائی نہ ہوسکی۔ قانونی طور پرکاروبار میں لگے کروڑوں روپے ڈوبنے کا خدشہ ہے۔ صدر امیراعظم خان، عبدالشہید پراچہ اور مکرم خان صباء کا پریس کانفرنس سے خطاب۔ تفصیلات کے مطابق ٹمبر ایسوسی ایشن درگئی کے صدر امیرا عظم خان، جنرلس یکرٹڑی عبدالشہید پراچہ، پریس سیکرٹری مکرم خان صباء، فرید پراچہ، اورنگ زیب خان، سبحان شیرین خان سمیت دیگر عہدیداروں اور چکدرہ ٹمبر مارکیٹ کے صدر محمد یار خان نے ٹمبر ایسوسی ایشن کے دفتر میں ایک پر ہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ 14جون 1986سے قانونی حیثیت رکھنے والا ٹمبر مارکیٹ درگئی میں محکمہ فارسٹ اور ملکی قوانین کے مطابق کاروبار کررہے ہیں۔ بیرونی ممالک میں لوگوں نے مزدوری کرکے یہاں پر کاروبار میں پیسہ لگایا۔ جس سے نہ صرف ہزاروں لوگوں اور اس پورے علاقے کو روزگار کے مواقع میسر ہے بلکہ صوبائی حکومت کو سالانہ 7ارب روپے کاریونیو بھی مل رہاہے ۔ ان سب کے باوجود ہمارا قانونی اور حکومت کے اجازت سے35الکھ فٹ لکڑی پھنسا پڑا ہے جو موسمی حالات اور علاقائی نشیب وفراز سے خراب ہونے بلکہ کروڑوں روپے ڈوبنے کاخدشہ ہے۔ ہم نے اس سے پہلے بھی حکومت کوآگاہ کیا۔ نیلامی سے بائیکاٹ کیا۔ لیکن پھر بھی ٹرانسپورٹ پاس جاری نہیں کیاجارہا۔ دوسری طرف حویلیاں کو لکڑی کی سپلائی جاری ہے ۔ محکمہ فارسٹ والے کہتے ہیں کہ ہمارے طرف سے کسی قسم کی بندش نہیں۔سیکرٹری سے ملاقات کی انہیں آگاہ کیا۔ صوبائی حکومت کو اربوں روپے کانقصان ہورہاہے لیکن وزیر اعلیٰ اور وزیر خزانہ کو اس نقصان کی کوئی پرواہ نہیں۔دوسری طرف بیرونی ممالک سے لکڑی کی درآمد سے ملک سے اربوں روپے باہر جارہے ہیں اور اپنے جنگلات کی لکڑی خراب ہورہے ہیں۔ان سب حالات کو دیکھتے ہوئے ہم محکمہ فارسٹ، صوبائی و زیر اعلیٰ، ایم پی اے سید محمد علی شاہ باچا، ایم این اے جنید اکبر، ناظم اعلیٰ ملاکنڈ سیدا حمد علی شاہ باچا، ڈی سی ملاکنڈ،امن جرگہ کے صدر حاجی اکرم خان اور دیگر تمام سیاسی اور سرکاری حکام سے مطالبہ کرتے ہیں کہ تین دن کے اندر اندر درگئی ٹمبر مارکیٹ کو لکڑی کی سپلائی شروع کیاجائے بصورت دیگر 31جنوری سے مین چوک درگئی بازار میں پر امن دھرنا دینگے۔نیلامی کابائیکاٹ جاری رکھیں گے ۔ نتیجتاً ہر قسم کے نقصان کا ذمہ دار محکمہ فارسٹ اور صوبائی حکومت ہوگی۔

مزید : پشاورصفحہ آخر