حکومتی گورننس پر تنقید کے لئے چند ماہ ناکافی ،عثمان بزدار کے پاس تجربہ نہیں، شہبازشریف سے ان کا مقابلہ نہیں بنتا:قمر زمان کائرہ

حکومتی گورننس پر تنقید کے لئے چند ماہ ناکافی ،عثمان بزدار کے پاس تجربہ نہیں، ...
حکومتی گورننس پر تنقید کے لئے چند ماہ ناکافی ،عثمان بزدار کے پاس تجربہ نہیں، شہبازشریف سے ان کا مقابلہ نہیں بنتا:قمر زمان کائرہ

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان پیپلزپارٹی کےسینئر رہنما اور سابق وفاقی وزیر اطلاعات قمر زمان کائرہ نے کہا ہے کہ وزیر اعلیٰ پنجاب  سردارعثمان بزدار کے پاس تجربہ نہیں ہے، اس لئے شہبازشریف سے ان کا مقابلہ بھی نہیں بنتا، گورننس پرتنقید یا حمایت کے لیے چند ماہ ناکافی ہیں، 6 ماہ حکومت کی کارکردگی کا جواب عام آدمی سے ملے گا.

نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے قمر زمان کائرہ کا کہنا تھا کہ سانحہ ساہیوال وزیراعلی پنجاب کے لیے ٹیسٹ کیس ہے،6 ماہ کی مدت حکومتی گورننس پر تنقید اور تعریف کے لئے انتہائی کم ہیں ،حکومتوں کی مقبولیت کے حوالے سے ہونے والے سروے ہمیشہ متنازعہ ہوتے ہیں اور یہ کوئی حتمی رائے نہیں ہوتی ،کبھی ان کا ڈیٹا نکلوا کر دیکھ لیں آپ کو خود ہی حقیقت پتا چل جائے گی ،عام آدمی سے پوچھیں کہ گذشتہ 6 ماہ میں ان کے گریلو حالات بہتر ہوئے یا بدتر ،آپ کو حکومتی پالیسیوں کی مقبولیت کے بارے پتا چل جائے گا ۔انہوں نے کہا کہ کرپشن ایک فنامنا ہےجس کو ختم کرنے میں بڑا وقت لگے گا ،یہ حقیقت ہے کہ ہم ایک کرپٹ سوسائٹی کا حصہ  ہیں اورکرپشن ہماری جڑوں میں سرایت کر چکی ہے،سوسائٹی کا کوئی حصہ ایسا نہیں جو کرپشن سے محفوظ ہو ، اگر تحریک انصاف کی حکومت دنیا کو یہ دکھا رہی ہے کہ پہلے ہم کرپشن ختم کریں گے پھر اس ملک کا نظام درست ہو جائے گا ،دنیا میں کوئی ایسا معاشرہ نہیں ہے جہاں پہلے کرپشن ختم کی گئی ہو اور پھر وہ معاشرہ درست ہوا ہو ،چین میں پھانسیاں لگنے کا عمل تو پچاس سال سے جاری ہے اس کا مطلب یہ ہوا کہ وہاں بھی کرپشن ختم نہیں ہوئی ۔قمر زمان کائرہ نے کہا ہمارے دور میں بھی بڑی خرابیاں ہوئیں ہیں لیکن ہم نے ریکارڈ قانون سازی بھی کی ،بہت سارے مسئلے حل بھی ہوئے اور کچھ بھی رہ گئے ،ویسٹ میں صرف ادارے نہیں بنے  پوری سوسائٹی کی مورل ویلیو بہتر ہوئی ہے ،ہمیں یہ بات سمجھنا ہو گی کہ کرپشن ادارے بنانے سے ختم نہیں ہوگی بلکہ اس کے لیے معاشرے کو مزاحمت کرنی ہوگی،عوامی دباؤ سے سیاسی جماعتیں بہتر ہوں گی،سیاسی جماعتوں کو  بھی احتساب کے لیے کھڑا ہونا ہوگا تب سماج بہتر ہوگا، جمہوریت کے اندرقانون سازی کے ساتھ عوامی دباؤ بھی ضروری ہے۔

قمر زمان کائرہ کا کہنا تھا کہ وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کے پاس تجربہ نہیں ہے، شہبازشریف سے ان کا مقابلہ نہیں بنتا،جو ان سے توقعات تھیں وہ اس پر پورے نہیں اتر سکے ہیں،اللہ کرے کہ وہ شہباز شریف سے اچھے ثابت ہوں تاہم ابھی تک تو وہ اپنے لوگوں اور عوامی رائے میں کچھ بہتر کارکردگی ثابت نہیں کر سکے ،وزیر اعلیٰ پنجاب سے جو توقعات تھیں وہ پوری نہیں ہو سکیں ،آج تو لوگ ان پر انگلیاں بھی اٹھا رہے ہیں،میرے بیٹی کے سسرال کی زمین پر تحریک انصاف کے ایم این اے نے گذشتہ رات قبضہ کیا ہے ،میں وزیر اعظم عمران خان اور وزیر اعلیٰ پنجاب کے لئے چیلنج ہے اور میں انہیں دعوت دے رہا ہوں کہ وہ اس کو ہی ٹیسٹ کیس بنا لیں ،اگر میں غلط ہوا تو سب کے سامنے کھڑے ہو کر معافی مانگوں گا نہیں تو ہمیں ہمارا حق دلوا دیں ۔

مزید :

قومی -