شہیدنوجوانکی نمازجنازہ میں ہزاروں افراد کی شرکت

شہیدنوجوانکی نمازجنازہ میں ہزاروں افراد کی شرکت

  

سرینگر(این این آئی)مقبوضہ کشمیر میں گزشتہ روز سرینگر کے علاقے کھنموہ میں بھارتی فورسز کے ہاتھوں شہید ہونے والے نوجوان ثاقب شفیع ڈار کی نما ز جنازہ میں ہزاروں لوگوں نے شرکت کی ۔ کشمیرمیڈیا سروس کے مطابق شہید نوجوان کی نماز جنازہ ضلع پلوامہ میں ان کے آبائی علاقے آری ہل میں ادا کی گئی۔ پلوامہ ، شوپیان اور دیگر اضلاع سے ہزاروں افرادنے شہیدثاقب کے آبائی علاقے کا رخ کیا اور اس کی نماز جنازہ میں شرکت کی۔شہیدنوجوان کی میت علاقے میں پہنچنے پر خواتین نے اپنے گھروں کی چھتوں اور کھڑکیوں سے اس پر پھولوں کی پتیاں نچھاور کیں۔شرکاء نے آزادی کے حق میں اور بھارت کے خلاف نعرے لگائے۔ بھارتی فوج کی پیلٹ گن سے فائرنگ میں کئی افراد زخمی ہوئے،ایک نقاب پوش مجاہد نے جنازے کے دوران نمودار ہوکر ہوا میں فائرنگ کرکے شہیدنوجوان کو سلامی پیش کی ۔ دوسری جانب کشمیر میڈیاسروس کے مطابق بھارتی فوجیوں نے27جنوری 1994 کوکپواڑہ قصبے میں دکانداروں، خریداری کیلئے بازار میں موجود لوگوں اور راہگیروں پر بلا اشتعال اندھا دھند گولیاں برسا کر 27بے گناہ کشمیریوں کو شہید کردیا تھا۔ہڑتال کی کال سید علی گیلانی ، میر واعظ عمر فاروق اور محمد یاسین ملک پر مشتمل مشترکہ حریت قیادت نے دی ہے جبکہ مقامی تاجر تنظیموں نے کال کی حمایت کی ہے۔ لوگ بڑی تعداد میں شہداء کی قبروں پر فاتحہ خوانی کیلئے ریگی پورہ کے علاقے میں واقع مزار شہداء جا رہے ہیں جبکہ قصبے کے دیگر مقامات پر بھی فاتحہ خوانی کی تقریبات کا انعقاد کیا گیا ہے۔قابض انتظامیہ نے بھارت مخالف مظاہروں کو روکنے کیلئے قصبے میں بڑی تعداد میں بھارتی فوجی اور پولیس اہلکار تعینات کر رکھے ہیں۔مقبوضہ کشمیر میں آزادی پسند کارکن عابد خان کی شہادت کی برسی پر آج(اتوار) ترال قصبے میں مکمل ہڑتال ہے۔ دکانیں اور کاروباری مراکز بند ہیں جبکہ سڑکوں پر ٹریفک کی آمد و رفت معطل ہے۔ بھارتی فوجیوں نے ترال کے علاقے ہنڈورہ رہائشی عابد خان المعروف حمزہ کو ایک اور نوجوان شیراز احمد ڈار کے ہمراہ 27جنوری 2015کو اپنے آبائی علاقے میں محاصرے اور تلاشی کی کارروائی کے دوران شہید شہید کیا تھا۔

مقبوضہ کشمیر

مزید :

علاقائی -