5نئے ڈیم تعمیر کرنے کا فیصلہ خوش آئند ہے‘ فیصل آبادچیمبر

5نئے ڈیم تعمیر کرنے کا فیصلہ خوش آئند ہے‘ فیصل آبادچیمبر

  

فیصل آباد(بیورورپورٹ)فیصل آباد چیمبر آف کامرس اینڈانڈسٹری کے مطالبے پر وفاقی حکومت کا چنیوٹ ڈیم سمیت ملک بھر میں پانچ نئے ڈیم تعمیر کرنے کی منظوری دینے کا فیصلہ خوش آئند ہے۔ فیصل آباد چیمبر آف کامرس اینڈانڈسٹری کے صدر سید ضیاء علمدار حسین نے نئے آبی ذخائر تعمیر کرنے کے سلسلہ میں موجودہ حکومت کی کوششوں کو سراہتے ہوئے کہا ہے کہ فیصل آباد کی بزنس کمیونٹی نے بہت عرصہ قبل ہی پانی کے بتدریج کم ہوئے وسائل کا ادراک کرتے ہوئے نئے آبی ذخائر تعمیر کرنے کا مطالبہ کیاتھا اور اس سلسلہ میں چنیوٹ ڈیم کی تجویز بھی پیش کی گئی تھی۔ انہوں نے بتایا کہ سابقہ حکومتوں کے دور میں بھی اس مسئلہ پر کچھ کام ہوا جبکہ واپڈا نے چنیوٹ ڈیم کے قابل عمل ہونے کے بارے میں ایک جامع رپورٹ بھی تیار کر لی تھی جس کے مطابق اس میں 0.85ملین ایکڑ فٹ پانی ذخیرہ کرنے کی گنجائش ہو گی جسے خشک سالی کے دوران زرعی مقاصد کیلئے استعمال کیا جا سکے گا۔مزید برآں اس ڈیم کے ذریعے سیلاب سے ہونے والے ممکنہ نقصانات سے بھی بچا جا سکے گا۔ سید ضیاء علمدار حسین نے بتایا کہ فیصل آباد مستقبل کا تیزی سے ابھرتا ہوا صنعتی، کاروباری اور تجارتی شہر ہے جس کی پانی ضروریات کو پورا کرنے کیلئے چنیوٹ ڈیم ضروری ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ڈیم کیلئے منتخب کی جانے والی جگہ قدرتی طور پر انتہائی مناسب اور موزوں ہے یہ مٹی کا ڈیم ہوگا جس کی بلندی 60فٹ ہو گی۔

جبکہ اس ڈیم سے 80میگا واٹ سستی بجلی بھی پیدا کی جا سکے گی۔ انہوں نے مزید بتایا کہ یہ چھوٹا ڈیم ہو گا جس کیلئے غیر ملکی امداد کی ضرورت نہیں پڑے گی اور اس کو مقامی وسائل سے ہی صرف 146.330ملین روپے کی لاگت سے مکمل کیا جا سکے گا۔ انہوں نے مزید بتایا کہ اس ڈیم کے دونوں اطراف نئی نہریں تعمیر کر کے نہ صرف مزید بے آباد رقبوں کو زیر کاشت لایا جا سکے گا بلکہ ان نہروں کے اطراف آباد شہروں اور قصبوں کی پینے کے پانی کی ضروریات کو بھی بآسانی پورا کیا جا سکے گا۔ انہوں نے اس ڈیم کی تعمیر کیلئے حکومت کی منظوری کا خیر مقدم کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ اس کی تعمیر کو فوری طور پر شروع کیا جائے تاکہ اسے جلد از جلد مکمل کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ اگر اس منصوبے کی تعمیر شروع کرنے میں بلاوجہ تاخیر کی گئی تو اس سے نہ صرف اس کی لاگت میں اضافہ ہو گا بلکہ بھارت سے دریائے چناب کے ذریعہ زیادہ پانی حاصل کرنے میں بھی مشکل ہو سکتی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ وہ واپڈا کے چیئرمین لیفٹینیٹ جنرل (ر) مزمل حسین سے عنقریب ملاقات کر رہے ہیں جس میں اس ڈیم کی جلد تعمیر شروع کرنے کے علاوہ واپڈا انجینئرنگ اکیڈمی کو یونیورسٹی کا درجہ دینے کے سلسلہ میں بھی گفتگو ہو گی۔ انہوں نے بتایا کہ فیصل آباد چیمبر آف کامرس اینڈانڈسٹری کے مطالبہ پر واپڈا انجینئرنگ اکیڈمی کو یونیورسٹی کا درجہ دینے کے سلسلہ میں پہلے ہی کافی پیش رفت ہو چکی ہے۔

مزید :

کامرس -