سہیل محمود کی دفتر خارجہ کے اعلیٰ عہدے پر تعیناتی کا امکان

سہیل محمود کی دفتر خارجہ کے اعلیٰ عہدے پر تعیناتی کا امکان

اسلام آباد(آن لائن)سیکریٹری خارجہ تہمینہ جنجوعہ کے ریٹائرمنٹ پر ہائی کمشنر برائے بھارت سہیل محمودکے ملک کا اعلیٰ سفارتکار بننے کے سب سے زیادہ امکانات ہیں۔تہمینہ جنجوعہ، جو پاکستان کی پہلی خاتون سیکریٹری خارجہ تھیں، 17 اپریل کو ریٹائر ہوں گی۔انہوں نے 2 سال تک اس عہدے پر فائز رہ کر اپنی خدمات سر انجام دیں۔2013 اور 2017 کی طرح اس مرتبہ سیکریٹری خارجہ کے عہدے کے لیے خاص مقابلہ سامنے آنے کے امکانات کم ہیں۔گزشتہ مقابلے میں صورتحال کچھ ایسی خراب ہوئی کہ جس کی وجہ سے سابق ہائی کمشنر برائے بھارت عبدالباسط نے استعفیٰ دیا تھا جو کسی زمانے میں دفتر خارجہ کے سب سے اہم رکن تھے۔2013 کے مقابلے کو اس لیے بھی توجہ حاصل ہوئی تھی کیونکہ مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے عبد الباسط کو جرمنی، جہاں وہ سفیر کے عہدے پر تعینات تھے، سے واپس بلا کر پاکستانی سفیر تعینات کردیا تھا تاہم ان کا عہدہ سنبھالنے سے قبل حکومت نے ان کی نامزدگی کو اعزاز چوہدری سے تبدیل کردیا تھا۔حالیہ مقابلے میں یورپی یونین، بیلجیئم اور لکسم برگ کی سفیر نغمانہ ہاشمی کو سب سے زیادہ سینیئر ہونے کا رتبہ حاصل ہے جبکہ سہیل محمود دوسرے نمبر پر ہیں۔تیسرے نمبر پر اٹلی کے سفیر ندیم ریاض اور چوتھے نمبر پر جنرمی کے سفیرر جوہر سلیم ہیں۔اس مقابلے کے لیے دیگر ناموں میں متحدہ عرب امارات کے معظم احمد بھی شامل ہیں تاہم وہ سینیئر ہونے کے حساب سے ان تمام افراد سے نیچے ہیں۔نغمانہ ہاشمی کے حوالے سے کئی افراد کا ماننا ہے کہ انہیں اس مقابلے میں زیادہ ترجیح نہیں دی جائے گی کیونکہ 1.5 سال میں ان کی ریٹائرمنٹ کا وقت ہے۔

سہیل محمود

مزید : صفحہ آخر