وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا کا میاں راشدحسین ہسپتال پبیکا اچانک دورہ ، ہسپتال اور پولیس انتظامیہ کی دوڑیں لگ گئی

وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا کا میاں راشدحسین ہسپتال پبیکا اچانک دورہ ، ہسپتال ...

پبی ( نما ئندہ)وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا کا میاں راشدحسین ہسپتال پبی پر چھاپہ ، ہسپتال اور پولیس انتظامیہ کی دوڑیں لگ گئی۔ٹریفک اہلکاروں کی موجودگی کے باوجود گاڑیاں سڑک پر پارک کی گئی تھی۔ صفائی کی خراب صورتحال، ڈیوٹی روسٹر کی عدم فراہمی اور 80 ڈاکٹروں میں سے صرف 3ڈاکٹر کی ڈیوٹی پر موجودگی پر وزیر اعلیٰ خیبرپختونخوا کی شدید برہمی ،وزیر صحت کے احکامات پر تاحال عمل نہ کرنے اور پبی ہسپتال کو نیا ایم ایس نہ بھیجنے پر محکمہ صحت سے جواب طلب کرلیا۔ وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا کا پبی ہسپتال کے راستے کا سخت نوٹس لیتے ہوئے متعلقہ حکام کو راستہ ایمرجنسی بنیادوں پر بند کرنے کے احکامات جاری کردئیے۔ تفصیلات کے مطابق وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان بغیر پروٹوکول کے میاں راشد حسین ہسپتال پبی پہنچ گئے ۔ اس موقع پر ان کے ہمراہ صوبائی وزیر اطلاعات شوکت یوسف زئی بھی ہمراہ تھے۔ وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا نے کیجولٹی میں موجود دو ڈاکٹر ز سے ہسپتال کے حوالے سے معلومات حاصل کی۔ انہوں نے خواتین اور مردوں کا اکھٹے معائنہ کرنے پر شدید برہمی کا اظہار کیا۔ اور خواتین کے لئے الگ معائنہ کی جگہ مختص کرنے کا حکم دیا۔ انہوں نے ہسپتال کے ایم ایس اور ڈی ایم ایس کو طلب کیا مگر دونوں موجود نہیں تھے۔ جبکہ لیبر روم میں صرف ایک لیڈی ڈاکٹر موجود تھی۔ آپریشن تھیٹر اور سرجیکل وارڈ کو تالے لگے ہوئے تھے۔ وزیر اعلیٰ محمود خان نے مختلف وارڈز اور لیبارٹری کا معائنہ کیا اوروہاں پر صفائی کی ابتر صورتحال پر شدید برہمی کا اظہار کیا۔ انہوں نے ادویات سٹور کا بھی معائنہ کیا اور وہاں موجود ادویات کے بارے میں تفصیلات حاصل کی۔ اس موقع پر کیجولٹی وارڈ میں کینسر کے مریض بچے کی عیادت کی اور اس کو فوری طور پر علاج کے لئے اس کے کوائف سی ایم ہاؤس بھجوانے کی ہدایت کی تاکہ اس کا بروقت سرکاری طور پر علاج معالجہ ہو سکیں۔ وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان نے پبی اس موقع پر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ہمارا اولین مقصد عوام کو سہولیات فراہم کرنا ہے۔ حکومت صحت کے مد میں خطیر رقم خرچ کر رہی ہے اس کے باوجود عوام اس سے مستفید نہ ہونے پر اداروں کو جواب دینا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ ادویات کی عدم موجودگی تو جواز ہو سکتا ہے مگر ہسپتال کی صفائی پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہوسکتا۔ صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر ہشام انعام اللہ خان نے ہسپتال کا دورہ کیا ہے اس کے احکامات پر ایک ہفتے تک کوئی عمل نہیں ہو سکا اس بارے محکمہ صحت سے جواب طلب کیا جائیگا۔ اس موقع پر ہسپتال میں کئی بے قاعدگیوں کا بھی انکشاف ہوا۔ ہسپتال کا سٹاف بغیر یونیفارم کے ڈیوٹی پر تھا۔ یہاں تک کہ پولیس اہلکاروں نے بھی وزیر اعلیٰ محمود خان کی آمد کے بعد وردی پہنی۔ ہسپتال کے گیٹ پر کوئی اہلکار ڈیوٹی پر موجود نہیں تھا جبکہ ہسپتال کے اندر عوامی راستے پر بھی شدید خفگی کا اظہار کیا گیا۔

مزید : کراچی صفحہ اول