ازدواجی فرائض کی باقاعدگی سے ادائیگی کا سب سے بہترین فائدہ سائنسدانوں نے بتادیا

ازدواجی فرائض کی باقاعدگی سے ادائیگی کا سب سے بہترین فائدہ سائنسدانوں نے ...
ازدواجی فرائض کی باقاعدگی سے ادائیگی کا سب سے بہترین فائدہ سائنسدانوں نے بتادیا

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) کئی تحقیقات میں سائنسدان خوشگوار ازدواجی تعلق کے بے شمار طبی فوائد بتا چکے ہیں اور اب امریکہ کی جارجیا سٹیٹ یونیورسٹی کے سائنسدانوں نے ایک نئی تحقیق میں ’باقاعدہ جنسی عمل‘ کا ایک ایسا حیران کن فائدہ بتا دیا ہے کہ کسی کے وہم و گمان میں بھی نہ تھا۔ میل آن لائن کے مطابق سائنسدانوں نے تحقیقاتی نتائج میں بتایا ہے کہ ”باقاعدگی کے ساتھ ازدواجی تعلق قائم کرنا بلڈپریشر کو اتنا ہی مو¿ثر طریقے سے کم کرتا ہے جتنا کہ اس کے لیے مارکیٹ میں موجود ادویات۔

اس تحقیق کے لیے سائنسدانوں نے بلڈپریشر کے سینکڑوں مریضوں پر تجربات کیے۔ انہیں دو گروپوں میں تقسیم کرکے ایک کو بلڈپریشر کم کرنے کے لیے عام استعمال کی جانے والی گولی Diureticدی جاتی رہی جبکہ دوسرے گروپ کے لوگوں کو اپنے شریک حیات کے ساتھ جنسی تعلق قائم کرنے کو کہا گیا۔ نتائج میں معلوم ہوا کہ دوسرے گروپ کے لوگوں کا بلڈپریشر ازدواجی تعلق قائم کرنے کے اگلے روز 13فیصد کم ہو گیا تھا۔ دوسری طرف پہلے گروپ کے بلڈپریشر میں بھی لگ بھگ اتنی ہی کمی ہوئی تھی۔

اس تحقیق میں سائنسدانوں نے لوگوں کے جنسی عمل کی طمانیت اور خوشگواریت کو بھی پرکھا اوراسے 66سے 106کے درمیان ریٹ کیا، اس کی اوسط شرح 87تھی۔ سائنسدانوں نے بتایا کہ جن لوگوں کا جنسی تعلق جتنا زیادہ خوشگوار رہا ان کے بلڈپریشر لیول میں اتنی ہی زیادہ کمی آئی۔ اس کی وجہ بیان کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ”جنسی عمل سے جسم میں آکسی ٹوسن نامی ہارمون پیدا ہوتا ہے جو ذہنی پریشانی کو کم کرتا ہے اور اس کے نتیجے میں بلڈپریشر بھی کم ہو جاتا ہے۔تجربے کے آغاز میں ان لوگوں میں سے جن کا بلڈپریشر 115ایم ایم ایچ جی تھا، جنسی عمل کے اگلے روز اس میں اوسطاً17ایم ایم ایچ جی کمی واقع ہو گئی تھی۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -