وزیراعظم عمران خان نے افغان طالبان سے ملنے کی خواہش کی تھی لیکن وہ نہیں مانے :حامدمیر کاانکشاف

وزیراعظم عمران خان نے افغان طالبان سے ملنے کی خواہش کی تھی لیکن وہ نہیں مانے ...
وزیراعظم عمران خان نے افغان طالبان سے ملنے کی خواہش کی تھی لیکن وہ نہیں مانے :حامدمیر کاانکشاف

  


اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)تجزیہ کار حامد میر نے کہاہے کہ کچھ دن پہلے وزیر اعظم کی خواہش تھی کہ افغان طالبان پاکستان کا دورہ کریں اور اسلام آباد میں ان کی وزیر اعظم سے ملاقات ہو ،پھر وہ زلمے خلیل زاد کے ساتھ بیٹھ جائیں لیکن افغان طالبان نے بات نہیں مانی۔

جیونیوز کے پروگرام ”آج شاہ زیب خانزادہ کے ساتھ“ میں گفتگو کرتے ہوئے حامد میر نے کہا کہ کچھ دن پہلے وزیر اعظم کی خواہش تھی کہ افغان طالبان پاکستان کا دورہ کریں اور اسلام آباد میں ان کی وزیر اعظم سے ملاقات ہو اور پھر وہ زلمے خلیل زاد کے ساتھ بیٹھ جائیں لیکن افغان طالبان نے بات نہیں مانی۔ان کا کہناتھا کہ اس وقت افغان طالبان بہت محتاط ہیں اور ان کی جانب سے یہ بات واضح کردی گئی ہے کہ وہ اشرف غنی اور ان کے کسی وزیر کے ساتھ نہ مذاکرات کریں گے اور نہ ہی افغان حکومت کے ساتھ پاور شیئر نگ کریں گے ۔

حامد میر نے کہاہے کہ جب بھی کوئی بھی امن کیلئے کوشش کرے تو اس کیلئے اچھی امید رکھنی چاہئے لیکن افغانستان میں قیام امن کیلئے کوششیں بہت دفعہ ہوئی ہیں اور نتیجہ خیز ثابت نہیں ہوئیں ، اس وقت صورتحال بہت سنجیدہ ہے ، پاکستان کا کردار صرف یہ ہے کہ افغان طالبان کو امریکہ کے ساتھ مذاکرات کیلئے میز پر لا کر بٹھا دیاہے ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے مسائل بہت زیادہ ہیں ، امریکہ کی ہمیشہ سے یہی پوزیشن رہی ہے کہ طالبان کیخلاف کارروائی کیلئے پاکستان پر دباﺅڈالا جاتا ہے اورساتھ یہ بھی کہا جاتا رہاہے کہ طالبان کو مذاکرات کی میز پر لاﺅ اور امن ہم کو پلیٹ میں رکھ کر پیش کرو۔

مزید : قومی