عدالتوں میں ججوں کا غیر سنجیدہ رویہ برداشت نہیں کیا جائے گا: چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ

عدالتوں میں ججوں کا غیر سنجیدہ رویہ برداشت نہیں کیا جائے گا: چیف جسٹس لاہور ...

  



لاہور (نامہ نگارخصوصی)چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ مسٹر جسٹس مامون رشید شیخ نے کہا ہے کہ عدالتوں میں ججوں کا غیر سنجیدہ رویہ کو ہرگز برداشت نہیں کیا جائے گا، وہ گزشتہ روز پنجاب جوڈیشل اکیڈمی میں حال ہی میں ترقی پانے والے ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن ججوں سے ان کے تین ہفتوں پر مشتمل تربیتی کورس کا آغاز پر خطاب کرہے تھے۔چیف جسٹس نے مزید کہا کہ ججوں کو پوسٹ مارٹم رپورٹس اور فرانزک رپورٹس پر عبور حاصل کرنا ہوگا،جج تہیہ کرلیں (بقیہ نمبر51صفحہ7پر)

کہ کسی بھی دباؤ میں آئے بغیر میرٹ اور قانون کے مطابق فیصلے کریں گے،ججز اپنی عدالتوں کا ماحول خوشگوار بنائیں اور غیر ضروری تاریخیں دینے سے اجتناب کریں،چیف جسٹس نے کہا کہ تربیتی کورس میں شریک ججوں سے کہا کہ بطور ایڈیشنل سیشن ججز انکی ذمہ داریاں بڑھ گئی ہیں. اب انہیں مرڈر ٹرائلز بھی کرنے پڑیں گے اور مرڈر ٹرائلز کیلئے بھرپور تربیت کی ضرورت ہوتی ہے، کریمنل جسٹس سسٹم عدلیہ کا مرکزی حصہ ہے،اس لئے ججز کو کریمنل جسٹس سسٹم کے حوالے سے مکمل طور پر اپ ٹو ڈیٹ ہونا ہوگا۔ قبل ازیں ڈی جی پنجاب جوڈیشل اکیڈمی حبیب اللہ عامر نے اس موقع پر اظہارِ خیال کرتے ہوئے کہا کہ ایڈیشنل سیشن ججز کے عہدے پر ترقی پانے والے جوڈیشل افسران کیلئے پہلی بار تین ہفتوں پر مشتمل تربیتی کورس شروع کیا گیا ہے۔اس موقع پررجسٹرار لاہور ہائیکورٹ اشترعباس عباس، ڈی جی ڈسٹرکٹ جوڈیشری ریحان بشیر اور سیشن جج ہیومن ریسورس ساجد علی اعوان بھی موجود تھے۔

غیر سنجیدہ رویہ

مزید : ملتان صفحہ آخر