پنجاب پروفیسرز اینڈ لیکچررز ایسوسی ایشن کے مطالبات منظوری کیلئے احتجاجی مظاہرے

پنجاب پروفیسرز اینڈ لیکچررز ایسوسی ایشن کے مطالبات منظوری کیلئے احتجاجی ...

  



ملتان(سٹاف رپورٹر) پنجاب پروفیسر اینڈ لیکچررز ایسویشن کی کال پر صوبے بھر میں ڈویژن کی سطح پر احتجاج کیا گیا۔ ملتان میں (بقیہ نمبر53صفحہ7پر)

اساتذہ کی ریلی ایمرسن کالج سے شروع ہوئی اور بوسن روڑ پر اختتام پذیر ہوئی جس کی قیادت پی پی ایل اے پنجاب کے صدر رمضان گرو کررہے تھے، انہوں نے کہا کہ9ماہ ہوگئے ہیں مگرحکومت نے جو وعدے کئے تھے ابھی تک پورے نہیں  کئیبلکہ اب ہمپر نجکاری کی تلوار لٹکادی گئی ہے۔چاردرجاتی فارمولا سے لیکر دیگر مطالبات تک کسی پر بھی کام شروع نہیں ہو۔ا اب پنجاب بھر میں 700 کالجز کو کمیونٹی کالجز کا درجہ دینے کا فیصلہ کیا گیاہے جو خلاف آئین ہے،ہم سرکاری کالجز کو کمیونٹی کالجز میں تبدیل نہیں ہونے دیں گے،گورنمنٹ ایمرسن کالج سمیت تمام سرکاری کالجز کی نجکاری کو روکا جائے گا‘انہوں نے کہا کہ سرکاری کالجزز میں پبلک پرائیویٹ پاٹنرشب کے عمل کو بھی روکا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ حد ہو گئی ہے کہ 22 سال سے زائد کا تجربہ رکھنے والے پروفیسرز بھی پرائیویٹ سیکٹر کے حوالے کرنے کی تیاری کی جارہی ہے، اس موقع پر دیگر مظاہرین نے کہا کہ آج ضلعی سطح پر احتجاج کیا گیا۔ حکومت کو یہ پیغام دینا چاہتے ہیں کہ مطالبات منظور کئے جائیں۔ حکومت کو دس فروری تک کی ڈیڈ لائن دیتے ہیں‘ اگر مطالبات منظور نہ ہوئے تو سیکرٹریٹ کا گھیراؤکریں گے۔

ملتان/مظاہرہ

مزید : ملتان صفحہ آخر