دہشتگردی کیخلاف کے پی پولیس فورس امن کی ضامن بن چکی، ڈاکٹر ثناء اللہ عباسی

دہشتگردی کیخلاف کے پی پولیس فورس امن کی ضامن بن چکی، ڈاکٹر ثناء اللہ عباسی

  



کوھاٹ (بیورو رپورٹ) انسپکٹر جنرل آف پولیس خیبر پختونخوا ڈاکٹر ثناء اللہ عباسی نے کہا ہے کہ دہشتگردی کے خلاف جنگ کے تجربے سے خیبر پختونخوا پولیس فورس امن کی ضامن بن چکی ہے۔پولیس اور مسلح افواج بنیادی انسانی حقوق کے محافظ ادارے ہیں،عوام سے وعدہ کرتے ہیں کہ بنیادی انسانی حقوق کی پاسداری کرتے رہیں گے۔ خیبر پختونخوا پولیس کی تاریخ بہادری اورصوبے میں امن وامان کے قیام کیلئے ان گنت قربانیوں سے بھری پڑی ہے۔پولیس،سیکیورٹی فورسز اور عوام کی مشترکہ کوششوں اور لازوال قربانیوں کی بدولت دہشتگردی کے خلاف جنگ جیتی جاچکی ہے اور اب ملک ترقی کی طرف گامزن ہورہا ہے۔ قبائلی اضلاع کی صوبے میں انضمام کے بعد وہاں مقامی روایات کے مطابق پولیسنگ کا نظام رائج کرنا اور لیویز خاصہ دار فورس کو پولیس فورس کا حصہ بننے پر انکی فلاح وبہبود اور مراعات کیلئے ہنگامی بنیادوں پر اقدمات اٹھانا ہماری سب سے اولین ترجیح ہے۔ لیویز خاصہ دار فورسز انضمام کے بعد پہلے دن سے ہی خیبر پختونخوا پولیس کا حصہ بن گئی ہیں انہیں بھی وہ تمام مراعات اور اختیارات ملیں گے جو خیبر پختونخوا پولیس کو حاصل ہیں۔شہدائے پولیس پوری قوم کے ہیرو اور عظیم محسن ہیں انکی قربانیوں کو کبھی فراموش نہیں کیا جاسکتا۔شہداء کے بچوں کی پولیس فورس میں بھرتی کیلئے مراسلہ تیار کرکے صوبائی حکومت کو ارسال کردیا گیا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پولیس لائنز کوہاٹ میں نیا سال شہداء پولیس کے نام سے منعقدہ پہلی شاندار تقریب سے بطور مہمان خصوصی خطاب اور ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔تقریب میں ریجنل پولیس آفیسر کوہاٹ طیب حفیظ چیمہ،بریگیڈ ئیر شہزاد، ڈی پی او کوہاٹ کیپٹن(ر)منصور امان،ڈی پی او ہنگو شاہد احمد خان،ڈی پی او کرک نوشیر خان،ڈی پی او اورکزئی صلاح الدین کنڈی،مقامی پولیس و عسکری حکام،سول انتظامیہ کے افسران اور شہداء کے لواحقین اور بچے کثیر تعداد میں موجود تھے۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انسپکٹر جنرل آف پولیس خیبر پختونخوا ڈاکٹر ثناء اللہ عباسی نے کہا کہ خیبر پختونخوا پولیس نے محدود وسائل میں بہادری کی لازوال مثالیں قائم کی ہیں۔شہداء کی قربانیوں کا اعتراف عالمی سطح پر بھی کیاگیا ہے۔انہوں نے کہا کہ دہشتگردی کے خلاف پولیس اور مسلح افواج سمیت خیبر پختونخوا کے عوام نے بھی بے پناہ قربانیاں دی ہیں اور انہیں کی قربانیوں کی بدولت آج امن لوٹ آیا ہے اور ملک ترقی کی طرف گامزن ہے۔انہوں نے کہا کہ شہید کی موت قوم کی حیات ہوتی ہے اور یہی وجہ ہے کہ شہیدوں کی قربانیوں سے ہم آزاد فضاء میں سانس لے رہے ہیں۔آئی جی پی کا کہنا تھا کہ پولیس اور مسلح افواج بنیادی انسانی حقوق کے محافظ ادارے ہیں اور اس امر کا عوام سے وعدہ کرتے ہیں کہ بنیادی انسانی حقوق کی پاسداری کرتے رہیں گے۔انہوں نے کہا کہ شہداء کے لواحقین کے مسائل کا حل اولین ترجیح ہے جسکے لئے ہر طرح کے وسائل بروئے کار لائے جائیں گے۔انسپکٹر جنرل آف پولیس ڈاکٹر ثناء اللہ عباسی نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ خیبر پختونخوا میں انضمام کے بعد قبائلی اضلاع میں مقامی روایات کے مطابق پولیسنگ کا نظام رائج کرنا اور لوگوں کے مسائل کا حل ہماری سب سے اولین ترجیح ہے جسکے لئے ہوم ورک مکمل کرلیا گیا ہے۔قبائلی اضلاع میں پولیس کی تعیناتی مکمل ہوچکی ہے اور وہاں تنازعات کے حل کونسلوں اور پولیس پبلک لیزان کونسلوں کا قیام عمل میں لایا جارہا ہے جس سے مقامی عوام بے حد مستفید ہونگے۔انہوں نے کہا کہ قبائلی اضلاع کی پولیس کو ہدایات جاری کردئیے گئے ہیں کہ وہ اپنے پیشہ ورانہ فرائض مقامی روایات اور لوگوں کے عین وابستہ توقعات کے مطابق ادا کریں۔انہوں نے لیویز اور خاصہ دار فورس کے جوانوں کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ لیویز خاصہ دار فورسز انضمام کے بعد پہلے دن سے ہی خیبر پختونخوا پولیس کا حصہ بن گئی ہیں انہیں بھی وہ تمام مراعات اور اختیارات ملیں گے جو خیبر پختونخوا پولیس کو حاصل ہیں۔تقریب سے ریجنل پولیس آفیسر کوہاٹ طیب حفیظ چیمہ نے بھی خطاب کیا اور انہوں نے شہدائے پولیس کی لازوال قربانیوں کو زبردست الفاظ میں خراج تحسین پیش کرتے ہوئے دہشتگردی کے خلاف جنگ اور قیام امن کیلئے انکی قربانیوں کو ناقابل فراموش قرار دیا۔انہوں نے کہا کہ نیا سال شہداء پولیس کے نام سے پہلی مرتبہ منعقدہ پروگرام کا دائرہ ریجن کے دیگر اضلاع تک بھی بڑھایا جائے گا اور شہداء پولیس کی یاد میں اس طرح کی دیگر شاندار تقاریب کا بھی اہتمام کیا جائے گا۔تقریب کے دوران انسپکٹر جنرل آف پولیس خیبرپختونخوا ڈاکٹر ثناء اللہ عباسی نے شہداء کے بچوں کے مابین منعقدہ تقریری مقابلوں میں پہلی،دوسری اور تیسری پوزیشن حاصل کرنیوالے بچوں میں باالترتیب انعامات اور مجموعی طور پر کوہاٹ پولیس کے76شہداء کے لواحقین اور بچوں میں تحائف تقسیم کئے جبکہ ریجنل پولیس آفیسر کوہاٹ طیب حفیظ چیمہ اور ڈی پی او کوہاٹ کیپٹن(ر)منصور امان نے کوہاٹ پولیس کی طرف سے آئی جی پی کوبندوق کے تحائف پیش کئے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر