10سال میں سربراہان مملکت کے 333غیر ملکی دورے، 4ارب 47کروڑ اخراجات

  10سال میں سربراہان مملکت کے 333غیر ملکی دورے، 4ارب 47کروڑ اخراجات

  



اسلام آباد (آئی این پی)وزیراعظم آفس کو وزارت خارجہ کی جانب سے 2008تا 2018کے سربراہان ممالک کے غیر ملکی دوروں کے اخر اجات کی تفصیلات موصول ہو گئی، دس سالوں میں سربراہان ممالک نے کل 333غیر ملکی دورے کئے، جس پر قومی خزانے سے 4ارب 47کروڑ روپے خرچ ہوئے، سب سے زیادہ دورے آصف زرداری نے کئے، 134غیر ملکی دوروں پر انہوں نے1 ارب 42کروڑ، نوا ز شریف نے 92غیر ملکی دوروں میں ایک ارب 83کروڑ روپے خرچ کئے۔پیر کو وزیراعظم آفس کی جانب سے 2008 تا 2018تک کی سربراہان مملکت کے دوروں کی جاری کردہ تفصیلات کے مطابق بطور وزیراعظم یوسف رضا گیلانی کے 48دوروں پر 57 کروڑ 16لا کھ خرچ ہوئے، شاہد خاقان عباسی کے 19دوروں پر 25کروڑ 95لاکھ روپے خرچ ہوئے، بطور صدر مملکت ممنون حسین نے 31دوروں پر 27کروڑ 82لاکھ روپے خرچ کئے، راجہ پرویز اشرف کے 9دوروں پر 10کروڑ 71لاکھ روپے خرچ ہوئے۔ وزیراعظم آفس کے مطا بق اخراجات کی تفصیل میں سربراہان مملکت کا علاج و معالجہ بھی شامل ہیں،مسلم لیگ (ن) کے دور میں بیرونی دوروں پر 2ارب 37 کر و ڑ 31لاکھ روپے خرچ ہوئے جبکہ پیپلز پارٹی کے دور میں بیرونی دوروں پر 2ارب 10کروڑ روپے خرچ ہوئے ہیں اور مسلم لیگ (ن) کے دور میں 142پیپلز پارٹی دور میں 191بیرونی دورے ہوئے۔ 2008 تا 2018تک کی سربراہان مملکت کے دوروں کی تفصیلات وزارت خارجہ کی جانب سے کابینہ ارکان کو تفصیلات بھیجی گئی ہیں

دورے اخراجات

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)وفاقی حکومت نے سابقہ سربراہان مملکت سے غیر ضروری اخراجات کی رقوم واپس لینے کا فیصلہ کرلیا۔ ذرائع وزیراعظم آفس کے مطابق 10 سال کے دوران سربراہان مملکت کے دوروں کی تفصیلات کابینہ کو موصول ہوگئی ہیں جو وزارت خارجہ کی جانب سے کابینہ ارکان کو بھیجی گئیں۔ذرائع کے مطابق حکومت نے غیر ضروری اخراجات کرنیوالوں سے رقوم واپس لینے کا فیصلہ کیا اور اس حوالے سے تمام وزارتوں اور ڈویڑن کو اہم ہدایات دیدی گئیں ہیں۔ذرائع نے بتایا حکومتی سربراہان اور فیملیز کے علاج معالجے پر اٹھنے والی رقوم واپس لی جائیں گی جبکہ پرائیویٹ سکیورٹی، کیمپ آفسز اور انٹرٹینمنٹ کی مد میں خرچ ہونیوالی رقم بھی واپس لی جائے گی۔ذرائع کا کہنا ہے کہ وفاقی کابینہ آج منگل کو رقوم کی واپسی کی منظوری دے گی۔

حکومت فیصلہ

مزید : صفحہ آخر