کھیلوں کی واپسی خوش آئند‘ تجارتی سرگرمیاں بھی ضروری ہیں: لاہور چیمبر

کھیلوں کی واپسی خوش آئند‘ تجارتی سرگرمیاں بھی ضروری ہیں: لاہور چیمبر

  



لاہور(لیڈی رپورٹر) پاکستان میں کھیلوں کی سرگرمیوں کی واپسی خوش آئند ہے، اس سے یقینا پاکستان کا بہترین تشخص اجاگر ہوگا مگر اس کے ساتھ ساتھ تجارتی سرگرمیاں بھی اتنی ہی ضروری ہیں لہذا حکومت تاجر برادری کی مشاورت سے ایسی منصوبہ بندی کرے جس کی وجہ سے کھیلوں کے میدان آباد رہیں اور ساتھ کاروباری سرگرمیاں بھی جاری رہیں۔ ان خیالات کا اظہار لاہور چیمبر کے نائب صدر میاں زاہدجاوید احمد تاجروں کے ہنگامی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر بشیر اے بخش، خادم حسین چودھری، ملک کلیم احمد اور رحمت اللہ جاوید نے بھی اظہار خیال کیا۔ میاں زاہد جاوید احمد نے کہا کہ پاکستان میں کھیلوں کے سونے میدان آباد ہونا، برطانیہ کی جانب سے پاکستان کے متعلق بہترین ٹریول ایڈوائزری جاری کرنا اس بات کا واضح ثبوت ہیں کہ پاکستان میں حالات بالکل پرامن ہیں، لاہور چیمبر اور تاجر برادری پاکستان کی بہترین ساکھ اجاگر کرنے کے لیے حکومت کی ہر کوشش کی حمایت کرتی ہے لیکن اس کے ساتھ ہی ضروری ہے کہ تجارتی سرگرمیوں کو بھی نقصان نہ ہو۔

انہوں نے کہا کہ حالیہ کرکٹ میچوں کے دوران قذافی سٹیڈیم کے اطراف میں لبرٹی مارکیٹ میں سمیت دیگر مارکیٹیں اور ریستوران جس کی وجہ سے کاروباری سرگرمیوں کو نقصان ہوا اور روزانہ اجرت پر کام کرنیوالے ورکرز کے چولہے نہیں جل سکے۔انہوں نے کہا کہ آئندہ ماہ پی ایس ایل کے بھی کئی میچ قذافی سٹیڈیم میں ہونا طے پایا ہے اور اگر اسی طرح اس دوران بھی مارکیٹیں بند کردی گئیں تو تاجروں اور روزانہ اجرت پر کام کرنے والے ورکرز کو مزید بھاری نقصان برداشت کرنا پڑے گا۔ انہوں نے کہا کہ تاجر برادری حفاظتی اقدامات یقینی بنانے کے لیے حکومت سے ہر ممکن تعاون کرنے کو تیار ہے مگر یہ چاہتی ہے کہ میچوں کے دوران مارکیٹیں اور ریستوران وغیرہ ہرگز بند نہ کیے جائیں کیونکہ اس سے دیکھنے والوں پر یہ تاثر پڑتا ہے کہ سکیورٹی کے حالات ابھی معمول کے مطابق نہیں ہیں۔ انہوں نے تجویز پیش کی کہ پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کے تحت قذافی سٹیڈیم کے نزدیک پرآسائش ہوٹل تعمیر کیا جائے جس سے تمام مسائل حل ہوجائیں گے۔

مزید : کامرس