سندھ میں نہروں کا پانی روکنے والوں کے خلاف آپریشن کا فیصلہ

  سندھ میں نہروں کا پانی روکنے والوں کے خلاف آپریشن کا فیصلہ

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر)سندھ کے وزیر برائے آبپاشی،زکوۃ و عشر اور انسداد بدعنوانی سہیل انور سیال نے کہا کہ محکمہ آبپاشی سندھ کی نہروں کا پانی روکنے والوں اور پانی چوروں کے خلاف آپریشن کیا جائے۔غیر قانونی آؤٹ لیٹس کے خلاف کارروائی کو مزید موثر بنایا جائے۔اور اس ضمن میں محکمہ آبپاشی کے غفلت کے مرتکب ذمہ دار افراد کے خلاف محکمہ جاتی تحقیقات کرتے ہوئے قانونی کاروائی عمل میں لائی جائے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈی سی لاڑکانہ کے دفتر میں منعقدہ محکمہ آبپاشی سندھ کے اہم اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔اجلاس میں ڈپٹی کمشنر لاڑکانہ، چیف انجینئر لاڑکانہ،پی ڑی اسکارپ،چیف انجینئر ڈ رینج، سپریٹنڈنٹ انجینئرز اور ایس ڈی اوز نے شرکت کی۔اجلاس میں صوبائی وزیر کو سال 2019،20 میں جاری سالانہ ترقیاتی منصوبوں اور نئی اسکیموں کے بارے میں تفصیلی بریفنگ دی گئی۔جبکہ کینالوں کی تعمیرومرمت اور مختلف بند اور نہروں کی موجودہ صورتحال کے بارے میں آگاہ کیا گیا۔ صوبائی وزیر سہیل انور سیال نے محکمہ آبپاشی کے افسران کو ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ واٹر کورسز کے تکنیکی معاملات میں آبی ماہرین سے مشاورت کرکے انہیں جامع رپورٹ مہیا کی جائے۔انہوں نے کہا کہ دریائے سندھ کو آلودہ اور گردونواح کی اراضی کو بنجر ہونے سے بچانا ہم سب کی اجتماعی ذمہ داری ہے۔جبکہ موجودہ پانی کے ذخائر کو آلودہ ہونے سے بچانے کے لیے محکمہ آبپاشی سندھ اپنے تمام دستیاب وسائل بروئے کار لائے۔صوبائی وزیر برائے آبپاشی سہیل انور سیال نے مزید کہا کہ دریائے سندھ سے ملحقہ اضلاع کے کسانوں کو پانی کی بروقت و بلاتعطل فراہمی کو یقینی بنایا جائے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر