احساس پروگرام کے تحت 100سے زائد منصوبوں کا آغا ز کیا گیا، ڈاکٹر ثانیہ نشتر

    احساس پروگرام کے تحت 100سے زائد منصوبوں کا آغا ز کیا گیا، ڈاکٹر ثانیہ نشتر

  



پشاور(سٹاف رپورٹر)وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے غربت کے خاتمے ومعاشرتی تحفظ ڈویژن(PASSD) ڈاکٹر ثانیہ نشترنے کہاہے کہ پسماندہ طبقے کواوپرلانے اورمستحق افرادکوانکا حق دلوانے کیلئے احساس پروگرام کے تحت 100سے زائدمنصوبوں کاآغاز کیاگیاہے،پاکستان میں پہلی مرتبہ احساس پروگرام میں جدیدطریقے سے مستحق افرادکوسالانہ24000روپے ادائیگی کی جارہی ہے،نئے پاکستان کے منزل کی جانب کامیابی سے رواں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پیسوں کی وصولی میں اب تیسرے شخص کی مداخلت کوختم کردیاگیا،پہلی مرتبہ ایک سیکیوراور بائیومیٹرک سسٹم کے ذریعے احساس پروگرام کے تحت ماہ کی7تاریخ کو ادائیگی کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ 31جنوری2020کووزیراعظم عمران خان اسی احساس پروگرام کے تحت خیبرپختونخوا کے اضلاع چارسدہ، لکی مروت،ہریپور اور مہمند قبائلی ضلع میں "کفالت پروگرام"کااجراء کررہے ہیں جس سے مستحق افراد مستفیدہوں گے۔ان خیالات کااظہارانہوں نے پشاورمیں شہرمیں الفلاح بینک کے سٹی برانچ میں بینظیرانکم سپورٹ پروگرام /احساس پروگرام کے ATM،برانچ ٹرانزکیشن اوررٹیلر/ایجنٹ کے افتتاح کے بعدذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پروزیراعلیٰ خیبرپختونخواکے مشیر اجمل وزیربھی موجودتھے۔وزیراعظم کی معاون خصوصی ڈاکٹرثانیہ نے کہاکہ خیبرپختونخواکیساتھ نئے ضم اضلاع(سابقہ فاٹا)میں بھی بہت جلدسروے کاآغاز ہورہاہے وہاں پرغربت کی شرح زیادہے،BISPاوراحساس پروگرام سے قبائلی اضلاع کے مستحق افرادکومستفیدکرنے کیلئے تمام وسائل وموثرپیمانے بروئے کارلائے جارہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ قبائلی اضلاع میں مستحق اورپسماندہ خاندانوں کاجدیدطریقے سے تعین کیا جائیگاتاکہ حق حقدارکوملے،وزیراعظم عمران خان کی احکامات کی روشنی میں غریب اورپسماندہ طبقے کواوپرلانے کیلئے اقدامات اٹھائے جارہے ہیں۔وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے پاورٹی ایلیویشن اینڈسوشل سیفٹی ڈویژن ثانیہ نشترنے ایک سوال کے جواب میں کہاکہ بینظیر انکم سپورٹ پروگرام سے مستفیدہونیوالے سرکاری وغیرمستحق افرادکیخلاف قانونی چارہ جوئی عمل میں لائی جارہی ہے۔انہوں نے کہاکہ وفاقی حکومت، صوبائی حکومت،محکمہ ریلوے،محکمہ پوسٹل سروس اورBISPکے ملازمین بھی پروگرام کے تحت پیسے وصول کررہے تھے، BISPسے8لاکھ20ہزار165لوگوں کونکالاگیاہے جن میں ایک لاکھ40ہزارسرکاری ملازمین تھے۔انہوں نے کہاکہ BISPکے گریڈ17کے 6افسران کوبرطرف کیاگیاجبکہ 2کیخلاف کاروائی جاری ہے،گریڈایک سے چارتک کے وظیفے بندکردیئے گئے جبکہ دیگر کیخلاف بھی انکوائری جاری ہے۔انہوں نے کہاکہ دیگرمتعلقہ اداروں کوبھی انکے ملازمین کی فہرستیں فراہم کردی گئیں ہیں۔

مزید : صفحہ اول