فحش اداکاراﺅں کی جوانی میں پراسرار اموات

فحش اداکاراﺅں کی جوانی میں پراسرار اموات
فحش اداکاراﺅں کی جوانی میں پراسرار اموات

  



نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک)نومبر 2017ءسے جنوری 2018ءکے دوران صرف 3ماہ کے عرصے میں فحش فلم انڈسٹری کی 5اداکارائیں ایسی عبرتناک موت سے دوچار ہوئیں کہ سن کر انسان کانپ جائے۔ ڈیلی سٹار کے مطابق ان تمام اداکاراﺅں کی موت منشیات کے زیادہ استعمال، خودکشی، خطرناک جنسی امراض یا دیگر ایسی ہی وجوہات سے ہوئیں۔ اولیویا نووا نامی اداکارہ کو سیپسس (Sepsis)نامی جنسی بیماری لاحق ہوئی جو اس کے گردوں تک پھیل گئی اور جنوری 2018ءمیں وہ محض 20سال کی عمر میں موت کے منہ میں چلی گئی۔ 12گھنٹے تک اس کی لاش اس کے فلیٹ میں لاوارث پڑی رہی اور جب 12گھنٹے بعد پولیس وہاں پہنچی تو اپنے بیڈ پر وہ برہنہ حالت میں اوندھے منہ مردہ پڑی تھی۔

کینیڈین فحش اداکارہ آگسٹ ایمز نے 5دسمبر 2017ءکو ایک پبلک پارک میں پھندہ لے کر خودکشی کر لی تھی۔ بل بیلے نامی فحش اداکار کی موت چار منزلہ عمارت سے گرنے کے باعث ہوئی۔ بتایا گیا کہ 38سالہ اداکار نے بہت زیادہ منشیات لے رکھی تھیں اور نشے کی زیادتی کے باعث وہ عمارت کی بالکونی سے گر گیا۔ 31سالہ یوری لو نامی فحش اداکارہ برونکونمونیا نامی بیماری میں مبتلا ہو کر موت کے گھاٹ اتر گئی۔ 23سالہ اولیویا لوا منشیات سے نجات حاصل کرنے کے لیے ری ہیبلی ٹیشن سنٹر میں مقیم تھی اور وہیں اس کی موت ہو گئی۔ 35سالہ شیلا سٹائلز نامی کینیڈین فحش اداکارہ کی سوتے میں موت واقع ہو گئی تھی۔ اس کی پوسٹ مارٹم رپورٹ میں بتایا گیا کہ اس نے منشیات بہت زیادہ استعمال کر لی تھیں جس کی وجہ سے اسے دل کا دورہ پڑا اور وہ ہلاک ہو گئی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس