گور نر چوہدری محمدسرور کا بھارت کیخلاف یورپی پار لیمنٹ کے751اراکین کو خط

گور نر چوہدری محمدسرور کا بھارت کیخلاف یورپی پار لیمنٹ کے751اراکین کو خط
گور نر چوہدری محمدسرور کا بھارت کیخلاف یورپی پار لیمنٹ کے751اراکین کو خط

  



لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن) گور نر پنجاب چوہدری محمدسرور نے یورپی پار لیمنٹ کے نائب صدر سمیت751اراکین یورپی پار لیمنٹ کو کشمیریوں پر بھارتی مظالم اور بھارت میں مسلمانوں کے خلاف شہریت قانون کیخلاف خط لکھ دیا،بھارت کی جانب سے کشمیر اور بھارت میں اقوام متحدہ سمیت عالمی اداروں کے7کنونشنز کی خلاف ورزی کی نشاند ہی بھی کر دی، 30جنوری کو بھارت کے خلاف یورپی پار لیمنٹ میں قرارداد کی منظوری کیلئے اراکین یورپی پار لیمنٹ سے ووٹ دینے کا مطالبہ کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق گورنر پنجاب کی جانب سے یورپی پار لیمنٹ کے نائب صدر فابیو ماسیمو کاستالدو سمیت سات سو سے زائد یورپی اراکین پار لیمنٹ کو لکھے جانے والے خط میں چوہدری محمدسرور نے بھارتی شہر یت قانون،کشمیر یوں پر مظالم کے خلاف یورپی پار لیمنٹ میں قراردادجمع کروانے پر یورپی اراکین پار لیمنٹ کا بھر پور شکر یہ ادا کرتے ہوئے کہاہے کہ وزیر اعظم عمران خان کی قیادت میں پاکستان آج بھی امن کی بات کر رہا ہے اوروزیر اعظم عمران خان دنیا بھر میں کشمیر یوں کے سفیر بن کرانکا مقدمہ لڑ رہے ہیں،امن کے قیام کیلئے مسئلہ کشمیر کا حل لازم ہو چکا ہے،بھارت نے شہر یت قانون اور کشمیر میں177دن کا کر فیو لگا کر بنیادی انسانی حقوق کے ساتھ ساتھ اقوام متحدہ سمیت عالمی اداروں کے7کنونشنز کی بھی سنگین خلاف ورزی کی ،بھارت اقوام متحدہ کے چارٹر، انسانی حقوق کے عالمی معاہدے کے آرٹیکل 15, یورپی یونین بنیادی حقوق چارٹر کے آرٹیکل 21, کشمیر پر اقوام متحدہ سیکیورٹی کونسل کی قراردادوں، کشمیر پر اقوام متحدہ کی رپورٹ 2019، انڈیا اور یورپی یونین کے انسانی حقوق پر مذاکرات اور بھارتی آئین کے آرٹیکل 14 سمیت دیگر قوانین، معائدوں، کنونشنز اور قراردادوں کی خلاف ورزی کا مرتکب پایا ہے۔یہ بات خوش آئند ہے کہ بھارتی مظالم کے خلاف 30جنوری کو قرارداد یورپی پارلیمنٹ میں منظوری کیلئے پیش جائیگی یورپی اراکین پار لیمنٹ کو چاہیے وہ30جنوری کو قرارداد کی منظوری کیلئے اپنا کرداد ادا کریں کیونکہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کا خاتمہ اور سی اے اے قانون بھارتی دہشت گردی ہے اوربھارتی متنازعہ شہریت بل دنیا میں سب سے بڑے کرائسس کو جنم دے رہا ہے۔

گور نر پنجاب نے اپنے خط میں مزید کہا ہے کہ یورپی یونین اور ممبر ممالک نے ہمیشہ بین الاقومی ایشوز پر کھل کر بات کی ہے جو خوش آئند ہے ،اب یورپی یونین اور ممبر ممالک مسئلہ کشمیر کے حل اور شہریت بل کی منسوخی کیلئے بھارت پر دباؤ ڈالے کیونکہ بھارت اپنے ملک کے اندر مسلمانوں اور کشمیر میں بے گناہ کشمیر یوں کیساتھ جو ظلم کر رہا ہےاس کی وجہ سے خطے میں امن داؤ پرلگ چکا ہے، مسئلہ کشمیر کے حل سے برصغیر میں سیاسی، معاشی فوائد حاصل کیے جا سکتے ہیں ،بھارت نے کشمیر میں کرفیو لگا کر کشمیریوں کو پوری دنیا سے جدا کر رکھا ہے سی اے اے قانون مسلمانوں کو بنیادی حقوق سے مائنس کررہا ہے۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور