کرونا وائرس، چین کا شہریوں کو بیرون ممالک سفر ملتوی کرنے کا مشورہ

کرونا وائرس، چین کا شہریوں کو بیرون ممالک سفر ملتوی کرنے کا مشورہ
کرونا وائرس، چین کا شہریوں کو بیرون ممالک سفر ملتوی کرنے کا مشورہ

  



بیجنگ(ڈیلی پاکستان آن لائن) چین کے ایمیگریشن حکام نے چینی شہریوں کو بیرون ملک سفر ملتوی کرنے کا مشورہ دیا ہے تاکہ کرونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکا جا سکے، واضح رہے کہ چین سے شروع اور پھیلنے والا خطرناک کرونا وائرس جان لیوا مرض میں تبدیل ہوگیا ہے،کروناوائرس سے چین میں ہلاک اور متاثرہ افراد کی تعداد مسلسل بڑھ رہی ہے جبکہ دیگر ملکوں میں بھی مریضوں میں اس وائرس کی تشخیص سامنے آرہی ہے۔

چینی میڈیا کے مطابق قومی ایمیگریشن انتظامیہ نے چینی شہریوں کو بیرون ملک سفر ملتوی کرنے کا مشورہ  دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس مشورے کا مقصد چینی اور غیر ملکی شہریوں دونوں کی زندگی اورصحت کا تحفظ کرنا اور غیر ضروری نقصان سے بچنا ہے کیونکہ چند ملکوں اور علاقوں نے وائرس کے پھیلا کے پیش نظر داخلے پر پابندیاں لگا دی ہیں۔انتظامیہ کا کہنا ہے کہ سرحدوں پر لوگوں کی آمدورفت کم کرنے سے وبائی مرض کے پھیلا کو روکنے میں مدد ملے گی۔حکام نے کہا ہے کہ جن افراد کو سانس کے انفیکشن کی علامات مثلا بخار، کھانسی اور سانس لینے میں دشواری کا سامنا ہو تو فوری طور پر سرحد پار سفر کا ارادہ ترک کر لیں تاکہ طبی امداد حاصل کر سکیں، ایسے مسافروں کو اپنےسفرنامے اورسفری معلومات حکام کوفراہم کرنی چاہیے۔سرحدی معائنہ کا رایجنسیوں نےچین بھر میں سال 2019 کے دوران 67 کروڑ افراد کی آمدورفت دیکھی جوکہ پچھلے سال کی نسبت 3.8 فیصد زیادہ تھی۔ایمیگریشن حکام کی جانب سے جاری اعداد وشمار سے ظاہر ہوتا ہے کہ 9 کروڑ 70 لاکھ غیر ملکی شہریوں نے چین آنے اور جانے کیلئے سفر کیا جب کہ 35 کروڑ چینی مین لینڈ کے شہریوں کی سرحد پر آمد و رفت ہوئی۔

مزید : بین الاقوامی