وزراء اورمعاونین کی باتیں جھوٹ کا پلندہ،آٹا بحران پیدا کرنے والے اُن لوگوں کو بے نقاب کیوں نہیں کیا جاتا جو کابینہ میں بیٹھےہیں:اکرام اللہ دھاریجو

وزراء اورمعاونین کی باتیں جھوٹ کا پلندہ،آٹا بحران پیدا کرنے والے اُن لوگوں ...
وزراء اورمعاونین کی باتیں جھوٹ کا پلندہ،آٹا بحران پیدا کرنے والے اُن لوگوں کو بے نقاب کیوں نہیں کیا جاتا جو کابینہ میں بیٹھےہیں:اکرام اللہ دھاریجو

  



کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)پیپلز پارٹی کےرہنمااورصوبائی وزیرسندھ جام اکرام اللہ دھاریجو نےکہاہےکہ وفاقی حکومت کے وزراء اورمعاونین کی باتیں جھوٹ کا پلندہ اوراصل مسائل سے توجہ ہٹانے کی ناکام کوشش ہے،کابینہ میں آٹابحران تلاش کرنے کی باتیں کرنےکےبجائےاپنی صفوں میں بیٹھے اُن عناصر کو کیوں بے نقاب نہیں کیاجا تا جو اِن بحرانوں کا سبب ہیں؟گورنرہاؤسز سمیت وزیراعظم ہاؤس کو یونیورسٹی میں تبدیل کرنےکےجھوٹے دعوی کرنے والوں کو سابق صدر آصف  زرداری پر تنقید کرنا زیب نہیں دیتا۔

نجی ٹی وی کے مطابق وزیر اعظم کی معاون خصوصی فردوس عاشق اعوان اور وفاقی وزیر مراد سعید کی میڈیا بریفنگ پر ردعمل دیتے ہوئے جام اکرام اللہ دھاریجو   نے کہا کہ سلیکٹڈ حکومت کے معاونین اور سلیکٹڈ وزرا کی میڈیا میں باتیں جھوٹ کا پلندہ ہیں،عوام کو ان جھوٹی باتوں پر شدید تحفظات ہیں، جھوٹے لوگ مزید کتنا جھوٹ بولیں گے؟۔ جام اکرام اللہ دھاریجو نے کہا کہ عوام کو ایک کروڑ نوکریاں اور پچاس لاکھ گھروں کے بارے میں کیوں نہیں بتایا جاتا ؟عوام کو آٹا، چینی اور اشیائے خور د ونوش کی قیمتوں میں اضافے کے بارے میں بھی بتایا جائے،کابینہ میں آٹا بحران تلاش کرنے کی باتیں کرنے کے بجائے اپنی صفوں میں بیٹھے اُن عناصر کو کیوں بے نقاب نہیں کیا جا تا جو ان بحرانوں کا سبب ہیں؟۔ جام اکرام اللہ دھاریجو نے کہا سی پیک سمیت جن منصوبوں پر موجودہ حکمران سیاست چمکا رہے ہیں وہ منصوبےآصف زرداری کے ذہن کی پیداوار ہیں،پیپلز پارٹی کے وفاقی حکومتوں میں عوام کو روزگاراور ملک کو میگا منصوبے ملے۔ 

اکرام اللہ دھاریجو نے کہا کہ مسلط لوگوں کو طرز حکمرانی کا پتہ ہی نہیں،صنعتکار اور کاروباری طبقہ کو سہولتیں فراہم کرنے کہ بجائے سٹیٹ بنک کےگورنر سے پریس کانفرنس کروانا کم عقلی نہیں تو اور کیا ہے؟موجودہ شرح سود کاروباری طبقہ کے زخموں پر نمک چھڑکنے کے مترادف ہے،حکومت بلند شرح سود سمیت گیس، بجلی کی لوڈشیڈنگ اورقیمتوں میں آئےدن اضافہ کرکے کاروباری طبقہ سمیت عام آدمی کی زندگی اجیرن کردی ہے،پچھلے دو ماہ سے صنعتوں کو گیس کی فراہمی میں تعطل کا سامنا ہے جسکی وجہ سے پیداوار مہنگی ہوتی جا رہی ہے، گندم کی بڑھتی قیمت کی وجہ سے کروڑوں افراد مزید غربت میں چلے گئے ہیں اور عوام یہ پوچھنے پر حق بجانب ہیں کہ وفاقی کابینہ کب عوام کی فلاح وبہبود کے لیے فیصلے کرے گی، پیپلز پارٹی پر تنقید کرنے والے پیراشوٹی سیاسی یتیموں کو  حکومتی گھونسلے میں بیٹھ کر شور مچانے پر مامور کردیا گیا ہے جو جلد ہی منطقی انجام کو پہنچ جائیں گے۔

مزید : علاقائی /سندھ /کراچی