تحریک انصاف 115کے ساتھ قومی اسمبلی میں سب سے بڑی پارٹی بن گئی : الیکشن کمیشن

تحریک انصاف 115کے ساتھ قومی اسمبلی میں سب سے بڑی پارٹی بن گئی : الیکشن کمیشن

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر ، مانیٹرنگ ڈیسک ،این این آئی) الیکشن کمیشن آف پاکستان نے قومی اسمبلی کے 270 میں سے 267، پنجاب کے تمام 295 ، سندھ کے 129، خیبرپختونخوا کے97 میں سے 96 اور بلوچستان کے تمام 50 حلقوں کے نتائج جاری کردیئے۔قومی اور خیبرپختونخوا اسمبلی میں پاکستان تحریک انصاف، سندھ اسمبلی میں پاکستان پیپلز پارٹی، پنجاب اسمبلی میں مسلم لیگ (ن) جبکہ بلوچستان اسمبلی میں بلوچستان عوامی پارٹی کو برتری حاصل ہے ۔ قومی اسمبلی میں پی ٹی آئی کو سب سے زیادہ 115 نشستوں پر برتری حاصل ہے جبکہ مسلم لیگ (ن) 64 نشستوں کیساتھ دوسرے اور پیپلز پارٹی 43 نشستوں کیساتھ تیسرے نمبر پر ہے۔قومی اسمبلی کیلئے متحدہ مجلس عمل (ایم ایم اے ) 13 اور 13 ہی آزاد امیدوار ہیں جبکہ ایم کیو ایم 6، مسلم لیگ ق 4، گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس 2، بی این پی 2، اے این پی 1، عوامی مسلم لیگ 1 اور بلوچستان عوامی پارٹی نے 3 نشستیں حاصل کی ہیں۔واضح رہے قومی اسمبلی کے 3 حلقوں کے نتائج ابھی آنا باقی ہیں جس میں خیبرپختونخوا کا ایک حلقہ این اے 32 اور بلوچستان کے 2 حلقوں کے نتائج جاری ہونا باقی ہیں۔اب تک موصول ہونیوالے نتائج کے مطابق عام انتخابات میں ووٹرز کا ٹرن آؤٹ 51 اعشاریہ 82 فیصد رہا۔پنجاب اسمبلی میں پاکستان تحریک انصاف اور پاکستان مسلم لیگ ن کے درمیان کانٹے کا مقابلہ ہے۔الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری کیے گئے نتائج کے مطابق پنجاب اسمبلی میں مسلم لیگ (ن) کو 129، تحریک انصاف کو 123 اور آزاد امیدوار کو 28 نشستیں حاصل ہوئیں۔اسمبلی میں مسلم لیگ ق کو 7، پیپلز پارٹی 6، بلوچستان عوامی پارٹی، مسلم لیگ فنکشنل اور پاکستان عوامی راج پارٹی کو ایک ایک نشست پر کامیابی ملی۔سندھ میں پاکستان تحریک انصاف ہمیشہ سے کامیابی حاصل کرنیوالی جماعت پیپلز پارٹی کا مکمل صفا یا کرنے میں ناکام رہی۔ الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری نتائج کے مطابق سندھ اسمبلی میں پیپلز پارٹی 76 نشستوں کیساتھ سب سے آگے ہے جبکہ پی ٹی آئی 23، ایم کیو ایم 16، گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس (جی ڈی اے) نے 11 نشستیں جیتیں۔اسی طرح تحریک لبیک پاکستان کو 2، متحدہ مجلس عمل ایک نشست مل سکی ہے جبکہ سندھ میں کوئی ا?زاد امیدوار کامیاب نہیں ہوسکا۔یاد رہے سندھ اسمبلی کی 130 میں سے 129 نشستوں پر 25 جولائی کو پولنگ ہوئی جبکہ ایک نشست کا انتخاب پہلے ہی ملتوی کردیا گیا تھا جس پر بعد میں الیکشن ہوں گے۔صوبہ خیبر پختونخوا میں ایک بار پھر تحریک انصاف حکومت بنانے کی پوزیشن میں ہے اور اس بار اسے حکومت بنانے کے لیے کسی اتحادی کی بھی ضرورت نہیں۔الیکشن کمیشن کے نتائج کے مطابق خیبرپختونخوا اسمبلی میں پی ٹی آئی 66، متحدہ مجلس عمل (ایم ایم اے) 10، عوامی نیشنل پارٹی 6، مسلم لیگ (ن) 5، پیپلز پارٹی 4 اور 5 نشستوں پر آزاد امیدوار کامیاب ہوئے۔کے پی کے کی ایک نشست پی کے 80 کا نتیجہ آنا باقی ہے جبکہ پی کے 78 اور پی کے 99 میں انتخابات ملتوی ہوگئے تھے۔بلوچستان اسمبلی کے انتخابی نتائج کے مطابق بلوچستان عوامی پارٹی کو صوبے میں برتری حاصل ہے۔الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری کیے گئے نتائج کے مطابق بلوچستان اسمبلی میں بلوچستان عوامی پارٹی (بی اے پی) 15، متحدہ مجلس عمل 9 اور بلوچستان نیشنل پارٹی (بی این پی۔ مینگل) 6 نشستوں پر کامیاب رہی۔اسی طرح آزاد امیدواروں نے 5، تحریک انصاف نے 4، عوامی نیشنل پارٹی، بی این پی عوامی نے 3،3 ، ہزارہ ڈیموکر یٹک پارٹی 2، پشتونخوا ملی عوامی پارٹی، مسلم لیگ (ن) اور جمہوری وطن پارٹی نے ایک ایک نشست پر کامیابی حاصل کی۔بلوچستان اسمبلی کی کل 51 نشستیں ہیں جن میں سے 50 پر انتخابات ہوئے اور ایک نشست پی بی 35 پر الیکشن ملتوی ہوئے۔ الیکشن کمیشن کے ڈائریکٹر ند یم قاسم نے جمعہ کو الیکشن کمیشن کے باہر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے بتایا عام انتخابات میں مجموعی ٹرن آؤٹ51.85 فیصد ،پنجاب میں 55فیصد اور بلوچستان میں ٹرن آؤٹ 44فیصد رہا ۔

انتخابی نتائج

مزید : صفحہ اول