نتائج مسترد ، چیف الیکشن کمشنر مستعفی ہوں ، پارلیمنٹ نہ جانے کی بات ٹھیک نہیں : بلاول

نتائج مسترد ، چیف الیکشن کمشنر مستعفی ہوں ، پارلیمنٹ نہ جانے کی بات ٹھیک نہیں ...

کراچی(سٹاف رپورٹر)پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹوزرداری نے کہاہے کہ ہم انتخابی نتائج کوتسلیم نہیں کرتے انتخابات میں دھاندلی کی گئی ہم جمہوریت پسند ہیں تمام جماعتوں کو ساتھ لیکر چلیں گے، پیپلزپارٹی مرکز میں اپوزیشن میں جائے گی اورڈٹ کراپوزیشن کرے گی ، ایوانوں سے باہر نہیں رہیں گے تمام جماعتوں سے کہتا ہوں پارلیمنٹ ضرور جائیں الیکشن کمیشن ناکام ہوگیاہے،چیف الیکشن کمشنرمستعفی ہوجا ئیں ۔ ان خیالات کا اظہارانہوں نے بلاول ہاس کراچی میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ قبل ازیں پیپلزپارٹی کی قیادت کا اہم اجلاس بلاول ہاس کراچی میں منعقد ہوا ،سابق صدرآصف علی زرداری اورپیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے مشترکہ صد ا رت کی ۔ اجلاس میں سید خورشید شاہ،سید نوید قمر،رحمن ملک،فرحت اللہ بابر،شیری رحمن،منظوروسان،اعتزازاحسن،نیئرحسین بخا ر ی ، قمر ز ما ن کائرہ سمیت پیپلزپارٹی کے سینئررہنماں نے شرکت کی۔اجلاس میں سینئررہنماؤں نے سندھ میں حکومت سازی اوروفاقی حکومت کیساتھ محاذ آرائی سے گریز کا مشورہ دیتے ہوئے ،وفاق میں حکومت سازی اوراپوزیشن پارٹیوں سے مشاورت کیلئے کمیٹی تشکیل دینے کی تجویز پیش کی جو قبول کرلی گئی۔ اجلاس میں عام انتخابات 2018 کے انتخابی نتائج پرمشاورت اورانتخابی دھاندلیوں پرغورکیا گیا۔اجلاس کے بعد پارٹی رہنماؤں کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو نے کہاپارٹی اجلاس میں پیپلزپارٹی نے سوچ سمجھ کر فیصلہ کیا ہے کہ وہ اس الیکشن کو مسترد کرتی ہے ، پارلیمنٹ نہ جانے کی بات ٹھیک نہیں، میں پارلیمان میں جاکر اس معاملے کو آگے لے جاؤنگا یہ فری اینڈ فیئر الیکشن نہیں تھے،اس وقت سیاسی جماعتیں پارلیمانی فورم کونہ چھوڑیں، دیگرجماعتوں کو بھی انتخابی نتائج پرسنجیدہ تحفظات ہیں ان سے بات کرینگے الیکشن کو مشکوک کرنے کی ضرورت نہیں تھی،شفاف انتخابات کرانا الیکشن کمیشن کی ذمہ داری ہے جمہوری لوگ ہیں اس الیکشن کو تسلیم نہیں کرسکتے ۔ ہم فیکٹ فائنڈنگ کریں گے ہم نے اے پی سی میں اسلئے شرکت نہیں کی کہ پارٹی کا اپنا اہم اجلاس تھا۔ آ صف زرداری اور فریال تالپور کو ایف آئی اے کی جے آئی ٹی میں بلانے سے متعلق ہمارا موقف واضح ہے یہ مقدمات سیاسی انتقام کا حصہ ہیں ہم سمجھتے ہیں فریال تالپور اور آصف زرداری پر مقدمات سیاسی ہیں ۔ پاکستان پیپلزپارٹی نے انتخابی عمل کے دوران اور بعد میں ہونیوالی دھاندلی کی بنیاد پر حالیہ الیکشن مسترد کیا ہے تمام جماعتوں کو ساتھ لیکر چلیں گے ایوانوں سے باہر نہیں رہیں گے اورہم سندھ میں بھی حکومت بنائیں گے۔ لیاری والے میرے لاڈلے ہیں میں کارکنوں کوسلام پیش کرتاہوں جنہوں نے پارٹی کی کامیابی کیلئے انتخابی مہم چلائی اور 2013 سے بہترنتائج ملے۔ وفاقی میں اپوزیشن میں بیٹھیں گے اورسندھ میں حکومت بنائیں گے مراد علی شاہ کودوبارہ وزیراعلی بنائیں گے ۔ انتخابی عمل کے حقائق کی تحقیقات کیلئے کمیٹی قائم کردی ہے جو تمام امورکا جائزہ لیکر رپورٹ بنائے گی پورے ملک کا انتخابی عمل سب کے سامنے ہے ،میں نہیں مانتا صاف و شفاف الیکشن ہوئے انتخابی عمل کو بے نقاب کریں گے۔

بلاول بھٹو

مزید : صفحہ اول