عوامی نیشنل پارٹی نے الیکشن نتائج مسترد کر دیئے ، 30جولائی کو احتجاج کا اعلان

عوامی نیشنل پارٹی نے الیکشن نتائج مسترد کر دیئے ، 30جولائی کو احتجاج کا اعلان

چارسدہ (بیورورپورٹ ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفندیار ولی خان نے حالیہ الیکشن کے نتائج کو مسترد کرتے ہوئے 30جولائی کو احتجاج کا اعلان کیا ہے اور انتخابات میں ہونے والی ننگی دھاندلی پاک فوج ، الیکشن کمیشن اور نگران حکومت کی ملی بھگت قرار دیا ہے، ولی باغ چارسدہ میں پارٹی کے تھنک ٹینک اجلاس کے بعد میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے اسفندیار ولی خان نے کہا کہ الیکشن کمیشن نے پہلے سے پلان کیا ہوا تھا اور جو بھی کیا گیا پولنگ ختم ہونے کے ایک گھنٹے کے اندر کیا گیا تمام پولنگ ایجنٹس کو ایک گھنٹے کیلئے باہر نکال دیا گیا اور اسی دوران ووٹوں کے بکس بھرے گئے ، اسفندیار ولی خان نے کہا کہ جس طرح کا الیکشن کرایا گیا اس سے ملک میں استحکاام آتا نظر نہیں آ رہا ،انہوں نے کہا کہ در حقیقت پشتون قیادت کو جان بوجھ کر ٹارگٹ کیا گیا ،یہ کاروائی اے این پی کے خلاف نہیں بلکہ تمام پشتونوں کے خلاف ہے، انہوں نے استفسار کیا کہ چیف الیکشن کمشنر ریاضی میں کمزور نہ ہوں تو حساب کر لیں 53سیکنڈ میں دو بیلٹ پیپر کیسے پول ہو سکتے ہیں،انہوں نے کہا کہ پولنگ کا سارا عملہ دھاندلی میں شریک تھا، الیکشن کمیشن کے جو بھی گڑ بڑ کی وہ ایک گھنٹے میں کی پولنگ ایجنٹس کو پولنگ بوتھ سے نکال دیا گیا ، آرمی کے جوان لوگوں کو بیٹ پر مہر لگانے کا کہتے رہے،اسفندیار ولی خان نے کہا کہ اے پی سی میں تمام جماعتوں کے مشاورت کے بعد متفقہ طور پر لائحہ عمل طے کیا جائے گا، تاہم پہلے مرحلے میں30جولائی کو اس دھاندلی کے خلاف ملک بھر میں احتجاج کیا جائے گا،انہوں نے کہا کہ یہ لڑائی کسی ایک فرد یا جماعت کی نہیں بلکہ سب کو مل کر فیصلہ کرنا ہو گا،ہم ہزاروں کارکن ایسے پیش کر سکتے ہیں جنہیں اے این پی کے بیج لگانے کی وجہ سے پولنگ سٹیشن میں نہیں جانے دیا گیا، انہوں نے کہا کہ میرے حلقہ میں خواتین کے ایک پولنگ سٹیشن میں کل ووٹوں کی تعداد 211تھی جبکہ پی ٹی آئی کے امیدوار کو 306ووٹ مل گئے یہ کہاں سے آ ئے ؟پشتون قیادت کو جان بوجھ کر باہر رکھا گیا تاکہ لاڈلے کو محفوظ ماحول فراہم کیا جائے اور پارلیمنٹ کے اندر کوئی تنقید کرنے والا نہ ہو ،انہوں نے ایک بار واضح کیا کہ اے پی سی میں ہونے والے فیصلوں کی روشنی میں آئندہ کا لائحہ عمل طے کریں گے اور تمام سیاسی جماعتوں کے متفقہ فیصلے پر ساتھ دیں گے۔انہوں نے سیکورٹی تھریٹس ہونے کے باوجود الیکشن میں پارٹی کارکنوں اور خصوصاً خواتین کی بھرپور شرکت پر ان کا شکریہ ادا کیا۔قبل ازیں پارٹی کے تھنک ٹینک کا اجلاس اسفندیار ولی خان کی صدارت میں منعقد ہوا جس میں حالیہ الیکشن میں ہونے والی بدترین دھاندلی سمیت اہم امور زیر غور آئے ۔

مزید : صفحہ آخر