’کوئی ایسی رات نہیں گزرتی جب میں۔۔۔‘ ایرانی فوج کے کمانڈر نے امریکہ کو سب سے خوفناک وارننگ دے دی، ایسا اعلان کردیا کہ بہت بڑا خطرہ پیدا ہوگیا

’کوئی ایسی رات نہیں گزرتی جب میں۔۔۔‘ ایرانی فوج کے کمانڈر نے امریکہ کو سب سے ...
’کوئی ایسی رات نہیں گزرتی جب میں۔۔۔‘ ایرانی فوج کے کمانڈر نے امریکہ کو سب سے خوفناک وارننگ دے دی، ایسا اعلان کردیا کہ بہت بڑا خطرہ پیدا ہوگیا

  

تہران(مانٹرنگ ڈیسک) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے گزشتہ دنوں ایران کو اپنے تئیں بہت ہی خطرناک دھمکی دی اور شاید وہ توقع کر رہے تھے کہ اب کبھی ایرانی حکام ان کے سامنے بولنے کی جرات نہیں کریں گے، مگر دلچسپ بات یہ ہوئی ہے کہ جواب میں امریکی صدر کو ایران کی جانب سے ایسی ایسی دھمکیاں ملنے لگی ہیں کہ بیچارے ساری دنیا کے سامنے شرمندہ ہو کر رہ گئے ہیں۔ پہلے ایرانی سپریم لیڈر اور وزیرخارجہ کی جانب سے امریکی صدر کی سرزنش کی گئی اور اب ایک اہم فوجی کمانڈر نے امریکی صدر کو ان کی اوقات یاد دلا دی ہے۔

میجر جنرل قاسم سلیمانی، جو کہ پاسداران انقلاب کے کمانڈر ہیں، نے ایران کی دفاعی قوت کے بارے میں امریکی صدر کو خبردار کرتے ہوئے انتہائی سنگین الفاظ میں جواب دیا ہے۔ مغربی شہر حمدان میں خطاب کرتے ہوئے جنرل قاسم سلیمانی کا کہنا تھا کہ ایرانی افواج دفاعی قوت میں امریکہ سے کسی طور کم نہیں ہیں اور امریکہ کیلئے برابر کا حریف ثابت ہوسکتی ہیں۔ وہ امریکی صدر کی دھمکی آمیز ٹویٹ کے ردعمل میں بات کررہے تھے، جس میں ایران کو خبردار کیا گیا تھا کہ امریکہ کو آئندہ کوئی دھمکی نہ دی جائے ورنہ اسے ایسے نتائج کا سامنا کرنا پڑے گا جس کی تاریخ میں مثال نہیں ملتی۔

ڈونلڈ ٹرمپ کو براہ راست مخاطب کرتے ہوئے جنرل قاسم سلیمانی کا کہنا تھا ”میں ایک سپاہی کے طور پر ٹرمپ کو جواب دیتا ہوں، تم نے ہمیں دھمکی دینے کی جرا¿ت کیسے کی؟ ہم تمہاری توقع سے زیادہ تمہارے قریب پہنچ چکے ہیں اور تم یہ جان لو کہ میں تمہارا دشمن ہوں۔ تم یہ بھی جان لو کہ ایک بھی رات ایسی نہیں گزرتی جب ہم تمہیں تباہ کرنے کا نہیں سوچتے۔ تم جنگ کا آغازضرور کرسکتے ہو لیکن یہ فیصلہ ہم کریں گے کہ اس کا اختتام کب ہوگا۔“

تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ امریکی صدر نے ضرورت سے زیادہ سخت الفاظ استعمال کئے جس کا ایران کی جانب سے ایسا ردعمل آنا فطری بات تھی۔ اگرچہ ایران کے سخت ردعمل کی توقع کی جا رہی تھی البتہ جس طرح پے در پے ایرانی اعلٰی حکام کی جانب سے صدر ٹرمپ پر وار کئے جا رہے ہیں اس کا نتیجہ دونوں ممالک کے درمیان خطرناک تصادم کی صورت میں بھی سامنے آ سکتا ہے۔

مزید : بین الاقوامی