وزیر اعظم کے کامیاب دورہ امریکہ سے دنیا میں پاکستان کی حقیقی شناخت ابھری:پرویز خٹک

وزیر اعظم کے کامیاب دورہ امریکہ سے دنیا میں پاکستان کی حقیقی شناخت ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


پشاور(سٹاف رپورٹر)وفاقی وزیر دفاع پرویز خٹک نے کہا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان کے کامیاب دورہ امریکہ سے پاکستان کی حقیقی شناخت دنیا میں ابھری ہے اور وزیر اعظم عمران خان نے ثابت کردیا کہ نیا پاکستان ایک باوقار پاکستان بن چکا ہے اور وہ امریکہ سمیت تمام ممالک کے ساتھ دوستانہ اور برابری کی بنیاد پر تعلقات استوار کرنا چاہتا ہے،جنگ مسائل کا حل نہیں عمران خان نے کشمیر کا مقدمہ اچھی طرح سے پیش کیا اور اج پور ی دنیا پر ہندوستان کی جارحیت بر بریت اور نہتے مسلمانو ں پر ظلم وستم اشکارہ کردیا امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے بھی کشمیر ایشو کو کور ایشو قرار دیا پاکستان خطے میں امن کی خاطرمسئلہ کشمیر کو مزاکرات کے زریعے حل کرنا چاہتا ہے وفاقی حکومت ملک میں یکساں نظام تعلیم رائج کرنا چاہتی ہے اور اس ضمن میں وفاق المدارس کے اقابرین کے ساتھ کامیاب مزاکرات ہوچکے ہیں تاکہ سکول کالج اور دینی مدرسے سے بہ یک وقت ایسے طلباء فارغ ہو جو دین اور دنیا کے علوم سے اراستہ ہونوشہرہ میں گرلز کالج کیمپس ضلع نوشہرہ میں طالبات کی تعلیم کے لیے بہتر زریعہ ثابت ہوگا وہ نوشہرہ میں قائد اعظم گروپ اف سکول اینڈ کالجز کی جانب سے نوشہرہ میں قائد اعظم گرلز کالج کی سنگ بنیا کی تقریب سے بطور مہمان خصوصی خطاب کررہے تھے اس موقع پر ارکان صوبائی اسمبلی میاں جمشید الدین کاکا خیل، محمد ادریس خٹک،عاقب اللہ خان، ڈی سی نوشہرہ شاہد علی خان، گروپ کے ڈائریکٹر عبدالوحید خان بھی موجود تھے،اس موقع پر گرلز کالج کی پرنسپل مس مرجان خٹک،مریم ایاز،ثانیہ زمان خان، بریرہ علی، مجتبا عامر،اورگروپ ڈائریکٹر عبدالوحید نے بھی خطاب کیا، انہوں نے موجودہ سکول سسٹم ثانوی تعلیم بورڈ کی کارکردگی پر شدید تحفظات کا اظہار کیا ہ اورکہا کہ خیبر پختون خوا میں تمام تعلیمی بورڈز کی کارکردگی انتہائی ناقص ہے جو طلبہ کی صحیح اسسمنٹ کرنے میں ناکام ہوچکی ہے لہذا وزیر اعظم عمران خان اور وزیر اعلی خیبر پختون خوا محمود خان اور وزیر دفاع پرویز خٹک اس اہم مسئلے کی طرف توجہ دیں تقریب میں تعلیمی بورڈ اور ایٹا کے ٹاپرزاور ہم نصابی سرگرمیوں میں بہتر کاردگی کرنے والے طلباء، طالبات اور بیسٹ ٹیچر زمیں لاکھوں روپے کے نقد انعامات بھی تقسیم کئے گئے تقریب میں بچوں نے ٹیبلوں پیش کرکے خوب داد سمیٹی مہمان خصوصی پرویر خٹک نے کہا کہ پاکستان انتہائی نازک دور سے گزر رہاہے اس ملک کے سابقہ حکمرانوں نے قومی دولت بے دردی سے لوٹی اور بیرونی ملک اپنے تجوریا ں بھرتے رہے، جس کا خمیازہ اج پوری قوم مہنگائی کی صورت میں بھگت رہی ہے غلط منصوبہ بندی اور اعداد وشمار کا ہیر پھیر کرکے ملک کو معاشی بحران سے دوچارکیا گیا اور ملک کو تیس ہزار ارب کا مقروض کردیا عمران خان نے معاشی اصلاحات کا اغاز اپنے دفتر سے کیا اور وزیر اعظم ہاوس وفاقی وزرا، اوروزراء ا علی کے خرچے کم کردیے اسی طر ح بچت کی پالیسی شروع کی قوم کو ٹیکس دینا ہوگا تاکہ یہ ملک اپنے پیروں پر کھڑا ہوسکے ہمیں ملک چلانے کے لیے سالانہ بیس ارب ڈالر کی ضرروت ہے بہت جلد یہ مرحلہ اجائے گا اور ملک معاشی بحران سے نکل جائے گا عوام کو اچھے دن دیکھنے پڑیں گے عمران خان نے قوم سے وعدہ کیا تھا کہ وہ چوروں کو نہیں چھوڑیں گے اب وہ چوروں پر ہاتھ ڈال رہے ہیں تو سب واویلاکررہے ہیں، پرویز خٹک نے کہا کہ سابقہ ناہل حکمرانوں نے نہ صرف قومی دولت لوٹی بلکہ لوٹ مار کرکے اداروں کو بھی تباہ کیا اور وہا ں بھی کرپشن کی ایسی بنیاد ڈالی کے اب بغیر پیسے کے کوئی کام نہیں ہوتا اور سب رشوت کو اپنا حق سمجھتے ہیں ایسے میں غریب ادمی کہا جائے ان مٹھی بھر اشرفیہ کو غریب عوام سے کوئی سروکار نہیں وزیر اعظم عمران خان نے حکومت سنھبالتے ہیں اصلاحات کا پروگرام شروع کیا جو مٹھی بھر اشرفیا پر ناگوار گزر رہاہے کیونکہ ان کو معلو ہے کے ان اصلاحات سے تمام سیاستدانوں کا تاریک ہوجائے گا انہوں نے کہا کہ میں نے اپنے دور کے صوبائی حکومت میں بڑے مشکل فیصلے کیے اور غریب عوام کی خاطر مجھے بہت مشکلات کا سامنا بھی کرناپڑا کیو نکہ ہر اچھے کام کے پیچھے بیوروکریسی کا سرخ پیتا اڑے آتا لیکن میں نے کسی کی پرواہ کیے بغیر ریکارڈ ائینی ترمیم کرکے اختیار ات عوام کو منتقل کیے پولیس کو پولیس فورس بنادیا تعلیم صحت اور عوام کے بنیا دی مسائل کے حل کے لیے ٹھوس اقدامات اٹھائے انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت نے وزیر اعظم عمران خا ن کی قیاد ت میں وہی صوبائی اصلاحات کو پورے ملک تک پھیلانے کا تہیہ کر رکھا ہے سابقہ ادوار میں تین قسم کی تعلیم رائج تھی جس میں امیروں کی تعلیم انگلش میں غریبوں کی تعلیم اردو اور مقامی زبانوں میں اور دینی مدارس کی تعلیم کو صرف دینی علوم تک محدود رکھا عمران خان نے یکسا تعلیم کے لیے سرکاری تعلیمی ادارے، نجی تعلیمی ادارے اور دینی تعلیمی مدارس میں ایک نصاب پڑھانے کے لیے اہم قدم اٹھا یا تاکہ غریب،امیر کا فرق ختم ہواور سب مقابلے کے امتحانات میں حصہ لینے کے قابل ہو،تمام تعلیمی اداروں میں انگریزی زریعہ تعلیم، دینی سائنسی علوم پڑھایا جائے گا خصوصادینی مدارس میں دینی تعلیم کے ساتھ جدید سائنسی اور کمپیوٹر کی تعلیم دی جائے جبکہ سرکاری اور نجی تعلیمی اداروں میں دینی علوم کا نصاب شامل ہوگا تاکہ ان اداروں سے نکلنے والے طلبہ طالبات قابل اور بہترین انسان بن سکے پرویز خٹک نے قائد اعظم سکول اینڈ کالجز کی انتظامیہ اور اساتذہ پر زور دیا کے بچوں اور بچیوں کو بہترین تعلیم سے اراستہ کریں کیونکہ یہی پاکستان کا مستقل ہے

مزید :

صفحہ اول -