عمران خان کا دورہ امریکہ پاکستان کو ایک نئی جنگ میں دھکیلنے کا اشارہ ہے:ایمل ولی

عمران خان کا دورہ امریکہ پاکستان کو ایک نئی جنگ میں دھکیلنے کا اشارہ ہے:ایمل ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


مہمند (نمائندہ پاکستان)عمران خان کا دورہ آمریکہ پاکستان کو ایک نئے جنگ میں دھکیلنے کی طرف ایک اشارہ ہے۔ وزیر اعظم کو بیرونی ملک اپنے اداروں پر کیچڑ اچھالنے سے ان کی حیثیت مشکوک دکھائی دیکھتا ہے۔ ابیٹ آباد کمیشن کو عام کیا جائے۔ ان خیالات کا اظہار اے این پی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان نے اے این پی کے نومنتخب ممبربائی اسمبلی نثار مہمند کے رہائش گاہ پر میڈیا سے گفتگوں کرتے ہوئے کیا۔ انھوں نے کہا کہ پاکستان کے تمام اداروں میں بداعتمادی پائی جاتی ہے جس سے ادارے اپنا قدر قیمت کھو چکا ہے۔ انھوں نے کہا کہ پی ٹی آئی ٹائیگرز نے پہلے دعوے کرتے تھے کہ ہمارے پاس منصوبہ بندی موجود ہے ان کو وقت سے پہلے نکال دیا۔ پی ٹی آئی حکومت ہر جگہ ناکام ہوچکا ہے۔ ملک کی اکانومی اور سٹاک ایکسچینج تباہی کے دھانے پر پہنچایا ہے۔ عمران خان پہلے سلیکٹڈ وزیراعظم تھے اب ریجیکٹڈ وزیر اعظم ہے۔ انھوں نے کہا کہ پاکستان ہمارا ملک ہے ہم ان کے اداروں کی قدر کرتے ہیں مگر عمران خان ٹرمپ ملاقات،سعودی شہزادے نے طے کیا تھا جس سے یہ اشارے ملتے ہیں کہ ہم ایک بار پھر آمریکہ کے اور جنگ میں دھکیل رہے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ سی پیک آمریکہ یاترا کی وجہ سے جمود کا شکار ہے جو ہمارے وزیر اعظم انتہائی نااہل ہے کیونکہ ان کو ملک چلانے کی ہمت نہیں۔ انھوں نے کہا کہ پاکستان کی تاریخ میں عمران خان سب سے جھوٹا وزیر اعظم ہے۔