پاٹا اور فاٹا انضمام ،ملاکنڈ لیویز فورس اور ملاکنڈ خزانہ کے اہلکار تذبذب کے شکار 

پاٹا اور فاٹا انضمام ،ملاکنڈ لیویز فورس اور ملاکنڈ خزانہ کے اہلکار تذبذب کے ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


 بٹ خےلہ (بیورورپورٹ )پاٹا اور فاٹا انضمام کے بعد ملاکنڈ لیویز فورس اور ملاکنڈ خزانہ کے اہلکار تذبذب کے شکار ، عید الاضحی قریب آنے کے باوجود ملاکنڈ لیویز فورس کے 1836سے زائد جوانوں کو نئے نوٹےفےکیشن کے مطابق تنخواہیں نہیں ملیں جس کی وجہ سے لیویز فورس کے جوانوں کی عید پیکی اور بغےر قربانی کے گزرنے کے آمکانات ہیں ۔اضافی تنخواہیں نہ ملنے کی وجہ سے لیویز کے جوانوں نے بڑی عید کے قرےب آنے پر بھی اپنے اور گھروالوں کے لئے عید کے کپڑے نہیں خریدے ہیں ۔ ملاکنڈ ڈویژن کے انضمام اور صوبائی حکومت کے ہداےات کے باوجودملاکنڈ لیویز کے جوان تا حال اضافی سکیل کے تنخواہوں سے محروم ہیں ۔ نوٹیفیکیشن کے مطابق ہفتہ اور اتوار کو چھٹی نہ کرنے اور ملازمین کو یکم آگست کو تنخواہیں دےنے کی ہداےت کی گئی ہے لیکن اس کے باوجود محکمہ خزانہ ملاکنڈ لیویز اہلکاروں کونئے نوٹیفیکیشن کے مطابق اضافی اسکیل کی تنخواہیں دےنے سے انکاری ہیں ۔ملاکنڈ لیویز فورس کو اس سے قبل مرکزی حکومت کی جانب سے تنخواہیں دئےے جاتے تھے لیکن پاٹا اور فاٹا انضمام کے بعدخیبر پختونخواہ کے صوبائی حکومت نے لیویز اہلکاروں کو پولیس برابر تنخواہیں دےنے کا اعلان کیا ہے ۔مرکزی حکومت کی جانب سے تنخواہوں کی بندش اور صوبائی حکومت کے اعلان کے باوجود ملاکنڈ لیویز کے اہلکار تذبذب اور ان کے گھر والے ذہنی کوفت کے شکار ہیں ۔ ملاکنڈ کے سیاسی و سماجی حلقوں سمےت انسانی حقوق کے علمبردار اور سینئر صحافی ولاےت خان باچہ المعروف باچہ جی نے صوبائی حکومت اور متعلقہ حکام سے پُرزور مطالبہ کیا ہے کہ عوام کے جان و مال کی حفاظت کرنے والے ملاکنڈ لیویز کے جوانوں کو فوری طور پر نئے نوٹےفیکیشن کے مطابق اضافی سکیل کی تنخواہیں دئےے جائےں تاکہ لیویز فورس کے جوان بھی بڑی عید کی خوشیاں مناسکے ۔انہوں نے کہا کہ اس سلسلے میں درپیش مشکلات ،قانونی پیچیدگی دور کرکے واضح پالیسی آپنائی جائے تاکہ فورس کے جوانوں کو ذہنی کوفت سے بچا یا جاسکے اور لیویز کے جوان تمام تر توجہ عوام کے حفاظت اور آمن و آمان کو بہتر بنانے پر دے سکیں ۔