بٹ خیلہ ، واپڈا پیسکو ڈویژن درگئی میں کھلی کچہری کاانعقاد

بٹ خیلہ ، واپڈا پیسکو ڈویژن درگئی میں کھلی کچہری کاانعقاد

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


بٹ خیلہ(بیورورپورٹ ) واپڈا پیسکو ڈویژن درگئی میں کھلی کچہری کاانعقاد، عوامی نمائندوں، سماجی کارکنوں، صحافی برادری اور عام صارفین نے کھل کر اپنے مسائل و مشکلات ایس ای پیسکو سوات سرکل کے سامنے رکھ دئیے،سٹاف کی کمی، گریڈ میں فون بند رہنے، بے جا پرمٹوں اور بغیر شیڈول کی لوڈشیڈنگ، ایک ایک پول میں چار ،پانچ بریکرز کی گزرنے سے کسی بھی وقت انسانوں کی تباہی،ریکلیم ٹرانسفارمروں کی لگتے ہی جلنے کی شکایت،جرمانہ معافی کااختیار ایکسئن درگئی کو دینے،سخاکوٹ فیڈر کوتقسیم کرنے، سخاکوٹ بازار کیلئے الگ کمپلینٹ ،سخاکوٹ سٹیڈیم میں تاروں سے خالی 66KVAپول کو ہٹانے، نہر کوارٹر درگئی اور سخاکوٹ مقبرہ میں نیچے گزارے گئے تاروں کی تبدیلی جبکہ نئے میٹر کے ساتھ صرف دس گز تار جیسے شکایات سامنے رکھ دئیے گئے۔اس موقع پر سوات سرکل کے سپرنٹنڈنٹ انجینئر خالد خان، ایکسئن درگئی شیررحمان خان، ڈی سی ایم عبدالودود خان، ریونیو آفیسر نواب علی خان، ایس ڈی اوز فرمان اللہ خان، حضرت حسن خان، آمیرمحمد خان، ہائیڈرو یونین کے ڈویژنل چیئرمین جاوید خان، جنرل سیکرٹری طارق عظیم،وائس چیئرمین سرکل سوات ملک نورزاد خان سمیت واپڈاکے دیگر اہلکار بھی موجود تھے۔ جبکہ کھلی کچہری میں گرینڈ اصلاحی جرگہ تحصیل درگئی کے صدر حاجی اکرم خان، ڈسٹرکت پریس کلب ملاکنڈ کے جنرل سیکرٹری ولایت خان باچہ، اے این پی کے ضلعی سیکرٹری اطلاعات اور یوسی سخاکوٹ بازار کے چیئرمین ساجد حسین مشوانی، تحصیل کونسلر حمید نواز خٹک، ٹریڈ یونین درگئی بازار کے جنرل سیکرٹری غلام حسن خان،تحریک انصاف کے تحصیل ممبر سبز علی خان، سماجی کارکن محمد زادہ آگرہ،ماسٹر عبدالودود سمیت عوامی نمائندوں اور بجلی صارفین نے کھل کر بجلی سے متعلق شکایات پر اظہار خیال کیا۔ سب سے بڑا مسئلہ واپڈا ملازمین کی کمی تھی جس کی وجہ سے عوام کو زیادہ تکلیف اور مشکلات کاسامنا کرنا پڑرہاہے ایک ایک بندے سے کئی کئی گاﺅں پر مشتمل کمپلینٹ کو چلایاجارہاہے جو نہ تو اس کی بس کی بات ہے اور نہ ہی 24گھنٹے قانون اس کی اجازت دیتاہے۔ایک ایک پول میں کئی فیڈروں کو گزارنے کے عمل کو تباہی کا منصوبہ قرار دیاگیاجو کسی بھی وقت بہت سے انسانوں کوبھسم کرسکتاہے ۔کنڈوں کے خلاف موثر کاروائی پر زور دیاگیا،بے جا لوڈ شیڈنگ اور پرمٹوں کا سد باب کیاجائے۔ورکشاپس سے دوبارہ بنائے جانے والے ٹرانسفارمروں کے لگتے ہی جلنے کے شکایات لگائے گئے۔جہاں کہیں بوسیدہ تاریں ہیں ان کو تبدیل کیاجائے جبکہ سخاکوٹ دیڈر کی بائپرکیشن/تقسیم کا مطالبہ کیاگیاساتھ ہی سخاکوٹ بازار کاکمپلینٹ جو کہ بہت بڑے علاقے پر مشتمل ہے کو دو کمپلینٹ بنانے کامطالبہ کیاگیا۔جس پر ایس ای سوات سرکل خالد خان نے بروقت احکامات جاری کرتے ہوئے فوری حل کرانے پر زور دیا۔ جرمانہ معافی کے اختیارات ایکسئن درگئی کو دئیے گئے۔جہاں کہیں تاروں کو تبدیل کراناہو، فیڈر کی بائپرکیشن ہو ، اوورلوڈ ٹرانسفارمرز ہو ان کی جلد ازجلد کاغذی کاروائی مکمل کرکے آگے اس پر کام کاوعدہ کیاگیا۔سٹاف کی انتہائی کمی ہے تاہم جیسے ہی سٹاف بھرتی ہوجائے درگئی میں تعینات کردینگے۔جن لوگوں سے ایل ٹی پول دور ہو ان کو پول لگانے کی ہدایت کی گئی تاکہ وہ کنڈہ لگانے سے باز آجائے اور قانونی میٹر لگائے۔ ایس ای سوات سرکل نے حاضرین کو یقین دلایا کہ میرے دروازے ہر کسی کیلئے کھلے ہیں جن کو بھی جو مسئلہ ہو میرے پاس بغیر کسی روک ٹوک کے آسکتے ہیں تاکہ بروقت آپ کی خدمت کرسکے۔عوام نے حکومت کے ایسے اقدامات کوسراہاجس سے باآسانی عوام کے مسائل حل کئے جاسکے۔