وزیر بلدیات سندھ نے عالمگیر خان پر سنگین الزامات عائد کردیئے

وزیر بلدیات سندھ نے عالمگیر خان پر سنگین الزامات عائد کردیئے
وزیر بلدیات سندھ نے عالمگیر خان پر سنگین الزامات عائد کردیئے

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیر بلدیات سندھ سعید غنی نے کہاہے کہ عالمگیر خان ڈھکن چور کے نام سے مشہور ہیں، عالمگیر خان نے بزرگ رہنما قائم علی شاہ کی تذلیل کی،گندا پانی اورکچرا وزیر اعلیٰ ہاﺅس میں پھینکا, تحریک انصاف اس بات کی وضاحت کرے کہ فکس اِٹ اس کی ذیلی تنظیم ہے اور کیا’’ ڈھکن چور ‘‘بانی عالمگیر کو انہوں نے ہی اس شہر میں سیاسی فسادات کے لئے اختیار دیا ہے؟

کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے سعید غنی نے کہا کہ عالمگیر خان ڈھکن چور کے نام سے مشہور ہیں،عالمگیر خان نے ایک سازش کے تحت اس شہر میں سیاسی فسادات پھیلانے کا بیڑا اٹھایا ہوا ہے، عالمگیر خان نے بزرگ رہنما قائم علی شاہ کی تذلیل کی ،تحریک انصاف فکس اٹ کے ذریعے ڈرامے کراتی ہے ، گھروں کے سامنے تماشہ نہیں کرنے دیں گے،میرے دفتر پر حملہ اور پیپلز پارٹی کے 8 کارکنوں کو زخمی کرنے کا مقدمہ بھی عالمگیر خان کے خلاف درج کرایا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ عالمگیر خان نے گندا پانی اورکچر اوزیر اعلیٰ ہاﺅس میں پھینکا ، احتجاج کرناہر کسی کاحق ہے لیکن گھروں پر کچرا پھینکنا کسی کاحق نہیں ہے ۔
سعید غنی نے کہا کہ آج سوشل میڈیا پر عالمگیر المعروف ’’ڈھکن چور‘‘ نے میرے کیمپ آفس پر احتجاج کی کال دی، جس کے بعد اس کے ماضی کے اقدامات بالخصوص وزیر اعلیٰ ہاؤس پر کیچڑ ،گندہ پانی پھینکنے اور دیگر واقعات کے پیش نظر پارٹی کے کارکنان ازخود میرے دفتر کے باہر پہنچ گئے حالانکہ ان کارکنان کو پارٹی یا میری جانب سے کسی قسم کی کوئی ہدایات نہیں تھی،ہمارا کوئی کارکن مسلح نہیں تھا اور نہ ہی ان کے پاس کوئی ڈنڈہ تھا البتہ پارٹی جھنڈے ضرور تھے، پیپلز پارٹی کے 9 کارکنوں کو پولیس نے گرفتار کیا ہے، اور افسوس کے احتجاج کے دوران کارکن زخمی بھی ہوئے ۔

سعید غنی کا کہنا تھا کہ ایسا محسوس ہوتا ہے کہ پی ٹی آئی نے اپنے ارکان قومی و صوبائی اسمبلی کو کراچی میں سیاسی فسادات کرانے کا ٹاسک دیا ہوا ہے، میں تحریک انصاف کی اعلیٰ قیادت سے سوال کرتا ہوں کہ کیا فکس اٹ تحریک انصاف کی ذیلی تنظیم ہے اور کیا تحریک انصاف نے اس تنظم کو کراچی میں سیاسی فسادات کرانے اور سیاسی کارکنوں کو لڑوانے کا کوئی ٹاسک دیا ہے؟ ماضی میں بھی اس ڈھکن چور عالمگیر خان نے سابق وزیر اعلیٰ سندھ قائم شاہ اور موجودہ وزیر اعلیٰ سید مراد علی شاہ کی تصاویر گٹروں پر بنائی لیکن ہم نے اس کا کوئی ردعمل نہیں دیا،عالمگیر اور اس کی فکس اٹ نے  گندے پانی میں میرے پتلے لگا کر اپنے آپ کو میڈیا میں ہائی لائٹ کرنے کی کوشش کی لیکن میں نے کوئی ردعمل نہیں دیا لیکن جب اس نے وزیر اعلیٰ ہاؤس کے دروازے پر سیوریج کا پانی اور کچڑہ پھینکا اس وقت میں نے وزیر اعلیٰ سندھ سے اس کے خلاف نوٹس لینے کا کہا تھا لیکن وزیر اعلیٰ سندھ نے اس کو اس کی کم عقلی قرار دے کر کوئی ردعمل نہیں دیا۔ انہوں نے کہا کہ کراچی میں ہمارے کارکنان لاکھوں کی تعداد میں ہیں اور وہ جذبات بھی رکھتے ہیں لیکن ہمارے سیاسی طور پر بصیرت کے باعث وہ خاموش ہیں اس کاہرگز یہ مقصد نہیں کہ ہم کمزور ہیں یا ہم اپنے گھروں اور دفاتر کی حفاظت نہیں کرسکتے؟۔

سعید غنی نے کہا کہ پرامن احتجاج سب کا جمہوری حق ہے اور ہم اس حق کو تسلیم کرتے ہیں،اس سے قبل ایم کیو ایم اور جماعت اسلامی نے بھی شہر میں پانی اور دیگر کے حوالے سے پرامن احتجاج کیا، ہم نے ان کے اس احتجاج کو ان کا جمہوری حق قرار دیا لیکن فکس اٹ اگر اس شہر میں احتجاج کے نام پر کسی کے گھروں اور دفاتر کو نشانہ بنائے گی تو وہ اپنے جمہوری حق کے دائرے سے باہر قرار پائے گی اور اس کا ان کو جواب بھی مل سکتا ہے

مجھے خرم شیر زمان نے فون کیاہے ، ہم شہر کے حالات خراب نہیں کرناچاہتے ۔

مزید :

قومی -