بہاولپور ‘ کرپشن کیس اہم مرحلے میں داخل ‘ متعدد شخصیات کیخلاف شکنجہ تیار

  بہاولپور ‘ کرپشن کیس اہم مرحلے میں داخل ‘ متعدد شخصیات کیخلاف شکنجہ تیار

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

بہاولپور (ڈسٹرکٹ رپورٹر) ڈاکٹر نعیم روَف سابق ڈی سی او ناجائز اثاثہ جات کیس ،ڈائریکٹر جنرل اینٹی کرپشن پنجاب سید اعجاز حسین شاہ نے ڈائریکٹر انٹی کرپشن اور ڈپٹی ڈائریکٹر (بقیہ نمبر47صفحہ12پر )

تفتیشی افسر کی سازش ناکام بناتے ہوئے مقدمہ ایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل انٹی کرپشن پنجاب چوہدری عبدالرب کے سپرد کردیا مبینہ ملزم ڈاکٹر نعیم روَف کا تعلق ڈی ایم جی گروپ سے ہے جس کو بے گناہ قرار دینے کیلئے نہ صرف بھاری رشوت وصول کی گئی بلکہ ڈائریکٹر انٹی کرپشن نے تفتیشی افسر پر دباوَ ڈالا تھا یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ با اثر ملزمان کے خلاف کرپشن کے ٹھوس دستاویزی ثبوت ریکارڈ کا حصہ ہیں اور ڈاکٹر نعیم روَف کی اہلیہ کے نام خرید کی گئی کروڑوں روپے مالیت کی بے نامی جائیداد کا معاوضہ بھی ساتھی ملزم کے بنک ٹرانکشن کا نتیجہ ہے لیکن جرم ثابت ہونے کے باوجود بار بار مقدمہ خارج کرنے کی تحریک کی گئیں لیکن فاضل سپیشل جج انٹی کرپشن جناب محمد ابراہیم اصغر نے مقدمہ کی نسبت رپورٹ زیر دفعہ 173ض ف طلب کئے جانے پر سابق ڈائریکٹر جنرل انٹی کرپشن پنجاب سید حسین اصغر نے ڈاکٹر نعیم روَف سمیت6ملزمان کی گرفتاری کا حکم صادر کیا جس کے نتیجے میں ساتھی ملزم سلطان جھنڈیر کو گرفتار کیا گیا لیکن تا حال مقدمہ کا چالان پیش نہیں کیا گیا اگرچہ سابق کمشنر بہاولپور کیپٹن (ر )اسداللہ خان کی مدعیت میں سابق ڈسی او بہاولپور ڈاکٹر نعیم روَف وغیرہ کے خلاف تھانہ انٹی کرپشن ہیڈ کوارٹربہاولپور میں ایف آئی آر نمبر25;47;14بجرم ;806765; 5(2)47,420;47;468,471;47;409 ;808067; کیا گیا تھا ڈاکٹر نعیم روَف نے بحیثیت ڈی سی او بہاولپور اپنی اہلیہ کیلئے بھاری مالیت کی زرعی اراضی خرید کی اپنے برادر نسبتی رضوان مصطفےٰ کے نام پر چھمب کلیار ضلع لودھراں کے قریب اپنے فرنٹ مین سلطان جھنڈیر وغیرہ کی پارٹنر شپ میں کروڑوں روپے مالیت کا چکن شیڈ بنایا اور بعد ازاں اپنی اہلیہ کے نام خرید شدہ سرکاری رقبہ اپنے قریبی ساتھیوں کے نام پر منتقل کروایا اپنے ماتحت ریونیو افسر پر دباوَ ڈال کر کروڑوں روپے مالیت کا سرکاری رقبہ لینڈ مافیا کے نام منتقل کرواکر بطور رشوت 17کنال اراضی اپنے قریبی ساتھی کے نام پر انتقال کروائی اور چکن شیڈ سے ملحقہ ایک اور چکن شیڈ کی تعمیر کی رنجش پر شدید اختلافات پیدا ہونے کے نتیجے میں رشوت کی صورت میں وصول کیا گیا رقبہ کسی دیگر شخص کے نام منتقل کروادیا گیا واضح رہے کہ ہنس چکن شیڈ کی دستاویزات پر ڈاکٹر نعیم روَف کے فرنٹ مین حکومت بلوچستان کوءٹہ میں ٹیپو نامی کلرک نے بطور گواہ دستخط کئے تھے بہا ولپور آمد کے موقع پر ڈاکٹر نعیم روَف نے چولستان ڈویلپمنٹ اتھارٹی کی سرکاری گاڑی ذاتی استعمال کیلئے ٹیپو نامی فرنٹ مین کے استعمال غیر قانونی طور پر دی جس نے کہروڑ پکا ضلع لودھراں میں ایکسیڈنٹ کرکے ایک شخص کو ہلاک کردیا تھا پولیس نے مقدمہ درج نہ کیا تو مقتول کے ورثاء کی جانب سے بعدالت ایڈیشنل سیشن جج صاحب زیر دفعہ 22-;65;کی پٹیشن دائر کی گئی فاضل جسٹس آف پیس کے حکم پر ٹیپو کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا ایکسیڈنٹ کی بناء پر سرکاری گاڑی کو بھی بھاری نقصان ہوا جسکی مرمت وغیرہ پر لاکھوں روپے کے اخراجات چولستان ڈویلپمنٹ اتھارٹی بہاولپور نے برداشت کئے سابق ڈی سی او مذکور نے اپنی اہلیہ کو کنواری ظاہر کرتے ہوئے کروڑوں روپے کی جائیداد کی خریداری لاکھوں روپے میں ظاہر کی تمام کاروائی میں اپنی اہلیہ کے جعلی دستخط اور انگوٹھے لگوائے گئے صائمہ روَف کے دستخط اور انگوٹھوں کی تصدیق اور تفتیش مقدمہ کیلئے تفتیشی آفیسر کو روبرو اپنی اہلیہ کو بھی تفتیش میں پیش نہیں کیا تھا ۔ ا س سلسلہ میں جب ڈائریکٹر اینٹی کرپشن بہاولپور سے رابطہ کیاگیاتوانہوں نے موضوع پرگفتگوکرنے سے گریز کیا ۔ جبکہ سابق ڈی سی او ڈاکٹرنعیم رءوف کیساتھ رابطہ نہ ہوسکا ۔ عوامی وسماجی حلقوں نے چیئرمین نیب، ایف ;200;ئی اے اوردیگراداروں سے اعلی سطحی غیرجانبدارانہ تحقیقات کامطالبہ کیاہے ۔

کرپشن کیس