خریداری میں اضافہ کے سبب روئی کے بھاؤ میں فی من300روپے کا اضافہ

خریداری میں اضافہ کے سبب روئی کے بھاؤ میں فی من300روپے کا اضافہ

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


کراچی(این این آئی)ملوں کی خریداری میں اضافہ کے سبب گزشتہ ہفتے کے دوران روئی کے بھاؤ میں فی من200تا 300روپے کا اضافہ ریکارڈ کیاگیا۔ بارشوں اور عید الاضحی کی طویل تعطیلات کے باعث کاروباری حجم میں اضافہ دیکھاگیاجبکہ چین اور امریکا کے اقتصادی تنازع کم ہونے کی خبروں سے نیویارک کاٹن میں اضافہ کا رجحان رہا۔مقامی کاٹن مارکیٹ میں گزشتہ ہفتے کے دوران ٹیکسٹائل واسپننگ ملزکی جانب سے روئی کی خریداری میں اضافہ اور پھٹی کی رسد میں بھی نسبتاً اضافہ کے باعث روئی کے بھاؤ میں اضافہ کا رجحان رہاجبکہ کاروباری حجم بھی بڑھ گیا آئندہ دنوں میں بارشوں کی پیشنگوئی اور عیدالاضحی کی طویل تعطیلات اور روپے کے نسبت ڈالر کے بھاؤ میں اضافہ ہونے کی توقع کے سبب ضرورت مند ملوں نے خریداری تیز کردی ہے، جس کے باعث روئی کے بھاؤ میں فی من 200 تا 300 روپے کا نمایاں اضافہ ہوا پھٹی اور بنولہ کا بھاؤ بھی بڑھ گیا صوبہ سندھ میں روئی کا بھاؤ فی من 8650تا8700روپے رہا پھٹی کا بھاؤ فی40 کلو3800 تا 4100 روپے بنولہ کا بھاؤ1550 تا 1600 روپے رہا جبکہ صوبہ پنجاب میں روئی کا بھاؤ8700 تا8750 روپے پھٹی کا بھاؤ فی40کلو 3700تا4200روپے بنولہ کا بھاؤ1550تا 1600 روپے رہا جبکہ صوبہ بلوچستان میں روئی کا بھاؤ فی من 8700 تا 8750 پھٹی کا بھاؤ فی40 کلو4100 تا4150 روپے رہا۔ فی الحال بلوچستان میں صرف 3 جننگ فیکٹریاں جزوی طور پر چل رہی ہے۔کراچی کاٹن ایسوسی ایشن کی اسپاٹ ریٹ کمیٹی نے اسپاٹ ریٹ میں فی من 200 روپے کا اضافہ کرکے اسپاٹ ریٹ فی من 8600 روپے کے بھاؤ پر بند کیا۔کراچی کاٹن بروکرزفورم کے چیئرمین نسیم عثمان نے بتایا کہ آئندہ دنوں میں عیدالاضحی کی طویل تعطیلات کے علاوہ قربانی کے جانوروں کی ترسیل کے لئے ٹرک و ٹرالوں کے کرایوں میں اضافہ ہوجائے گا اور روئی کی ترسیل سے جانوروں کی ترسیل میں زیادہ کرایہ ملنے کی وجہ سے ٹرک و ٹرالے والے قربانی کے جانوروں کی ترسیل کو ترجیح دیتے ہیں۔
علاوہ ازیں آئندہ دنوں بارشوں کی پیشنگوئی کی وجہ سے روئی کی کوالٹی متاثر ہونے اور پھٹی کی رسد میں کمی کے سبب ضرورت مند ٹیکسٹائل ملز خریداری میں اضافہ کردیتے ہیں جس کے باعث روئی کے بھا میں اضافہ ہوجاتا ہے۔ دوسری جانب جننگ فیکٹریوں کے مالکان شکایت کر رہے ہیں کہ جننگ ایلڈ GINNING YEILD میں کمی واقع ہورہی ہے جس کی وجہ صوبہ سندھ میں شدت کی گرمی بتائی جاتی ہے اور تیز ہواں کی وجہ سے فلاور شیڈنگ Flower shading بھی بتائی جاتی ہے جو بھٹی کی رسد میں حائل ہو رہی ہے۔ ماہرین کا خیال ہے کہ عیدالاضحی کے بعد کاروبار میں اضافہ ہو سکے گا صوبہ پنجاب میں پھٹی کی آمد میں اضافہ ہورہا ہے اور آئے دن نئی نئی فیکٹریاں شروع ہورہی ہے دونوں صوبوں میں مجموعی طور پر فی الحال کپاس کی فصل تسلی بخش بتائی جاتی ہے۔ گزشتہ ہفتے کے دوران نئی  فصل کی روئی کے بھا میں اضافہ کے رجحان کے سبب کئی ملز نے پرانی روئی کی خریداری میں اضافہ کردیا ہے جس کے باعث پرانی روئی خاصی مقدار میں فروخت ہوگئی تاہم فی الحال صرف تقریبا 60 تا 70 ہزار گانٹھیں بچی ہوگی۔بین الاقوامی کاٹن مارکیٹوں میں مجموعی طور پر ملا جلا رجحان کہاجاسکتاہے چین اور امریکہ کے مابین طویل اقتصادی تنازع کے حل کے لیے آئندہ ہفتے مذاکرات کی خبروں کی وجہ سے نیویارک کاٹن مارکیٹ میں اضافے کا رجحان ہے۔ USDA کی ہفتہ وار رپورٹ میں گزشتہ ہفتے کے نسبت روئی کی برآمد میں اضافہ ہوا لیکن دنیا کا کپاس کا سب سے زیادہ استعمال کرنے والا ملک چین امریکا سے روئی کی درآمد میں دلچسپی نہیں لے رہا اس وجہ سے امریکن روئی کے بھا میں خاطر خواہ اضافہ نہیں ہو پا رہا۔

مزید :

کامرس -