حکومت کا شمالی علاقوں میں ٹراؤٹ مچھلی کی پیداوار بڑھانے کا فیصلہ

  حکومت کا شمالی علاقوں میں ٹراؤٹ مچھلی کی پیداوار بڑھانے کا فیصلہ

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


اسلام آباد ( آن لائن)پاکستان کے شمالی علاقوں میں ٹراؤٹ مچھلی کی پیداوار بڑھانے کیلئے وفاقی حکومت ایک ارب 45کروڑ روپے سے زائد کی رقم خرچ کرے گی۔وزارت فوڈ سکیورٹی و ریسرچ ڈویژن نے ذرائع کے مطابق رواں مالی سال 2019-20 کے دوران اس منصوبے کیلئے 20کروڑ روپے مختص کئے گئے ہیں جبکہ اس منصوبے کیلئے ایک ارب 45کروڑ90 لاکھ روپے سے زائد رقم خرچ کی جائے گی۔واضح رہے کہ شمالی علاقہ جات جن میں خیبرپختونخوا کے اضلاع سوات، مانسہرہ،سمیت شامل ہیں یہاں پر اعلی نسل کی ٹراؤٹ مچھلی پائی جاتی ہے جو انتہائی قیمتی اور ذائقہ دار ہے۔اس منصوبے سے ان علاقوں میں ٹراؤٹ فارمنگ کی حوصلہ کی جائے گی جس سے روزگار کے نئے مواقع بھی پیدا ہونگے۔علاوہ ازیں مچھلی کی پیدوار بڑھانے کے لئے خیبر پختونخوا میں فش پراسسینگ پلانٹس لگانے کا فیصلہ کیا ہے جس کا مقصد فشریز کے شعبے کی پیدوار کو فروغ دینے اور فشریز فارمنگ سے وابستہ کسانوں کو مراعات اور ضروریات فراہم کرنا ہے مچھلی کی پیدوار بڑھانے کے لئے چاروں صوبوں میں ساٹھ سالہ پروگرام شروع کیا جارہاہے جس پر تقریباً چھ ارب روپے خرچ کئے جائینگے یہ منصوبہ وفاق اور صوبوں کے درمیان شیئرنگ کی بنیادپر ہوگا اس منصوبے کے لئے وفاقی حکومت ایک ارب 31کروڑ روپے کی رقم فراہم کریگی اس کے علاوہ نجی اس منصوبے کے لئے ایک ارب 80کروڑ روپے کی معاونت کریگی منصوبے کے تحت ملک بھر میں فش او رجھینگا، ہیچریز ماڈل فارم اور ریسرچ سنٹرز قائم کئے جائینگے خیبر پختونخوا میں سوات، بونیر سمیت فشریزسنٹرز قائم کئے جائینگے پنجاب حکومت 2ارب 42کروڑ، سندھ حکومت 57کروڑ سے زائد کی رقم اس منصوبے کے لئے فراہم کریگی۔

مزید :

کامرس -