پولیس کانسٹیبل کو قتل کرنیوالے 2 افغان مہاجروں کی ضمانت منسوخ

    پولیس کانسٹیبل کو قتل کرنیوالے 2 افغان مہاجروں کی ضمانت منسوخ

  

پشاور(نیوزرپورٹر)پشاور ہائیکورٹ کے جسٹس قیصر رشید نے ڈیوٹی سے واپس آنے والے پولیس کانسٹیبل کو ڈکیتی بعد قتل کرنے کے الزام میں گرفتار دو افغان مہاجرین کی ضمانت پر رہائی کی استدعا مسترد کر دی مدعی مقدمہ کی جانب سے کیس کی پیروی علی زمان ایڈوکیٹ نے کی استغاثہ کے مطابق ملزمان کاشف اور فرمان جو کے افغانستان سے تعلق رکھتے ہیں بھانہ ماڑی کے پولیس اہلکار رحیم خان کو 1 مارچ 2002 کو ڈکیتی کے دوران زخمی کیا تھا تاہم بعد میں وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے جاں بحق ہو گیا بھانہ ماڑی پولیس نے جیوفنسنگ کے زریعے تفتشی کے بعد ملزمان کو گرفتار کرلیا دوران سماعت مدعی مقدمہ کے وکیل علی زمان نے عدالت کو بتایا کہ ملزمان نے اس کے موکل سے موبائل، موٹرسائیکل، سروس کارڈ سمیت دیگر اشیا چھینے کے بعد زخمی کر دیا پولیس نے تفتیش کے بعد ملزمان کو گرفتار کرکے اس کے قبضے سے لوٹا ہوا سامان بھی برآمد کرلیا جبکہ ملزمان کے قبضے سے واردات میں استعمال ہونے والا پستول بھی برآمد کرلیا اس لئے ملزمان کسی بھی قسم کی رعایت کے مستحق نہیں عدالت نے دلائل مکمل ہونے پر ملزمان کی ضمانت درخواست خارج کر دی

مزید :

پشاورصفحہ آخر -