پنجاب حکومت کا عید کے بعد سینما، تھیٹرز کھولنے،فنکاروں کی مالی امداد کا فیصلہ

  پنجاب حکومت کا عید کے بعد سینما، تھیٹرز کھولنے،فنکاروں کی مالی امداد کا ...

  

لاہور(نمائندہ خصوصی)پنجاب اسمبلی کا اجلاس 7اگست تک ملتوی کر دیا گیا جبکہ اپوزیشن نے 7اگست تک اجلاس ملتوی کرنے کے اقدام کو غیر آئینی قراردیدیا۔ تفصیلات کے مطابق پنجاب اسمبلی کا اجلاس چیئر مین میاں محمد شفیع کی صدارت میں شروع ہوا۔ اجلاس میں پارلیمانی سیکرٹری ندیم قریشی نے بتایا کہ پنجاب حکومت نے کورونا وائرس سے بچاؤ کے باعث بند کئے گئے تھیٹروں اور سینما گھروں کو عید کے بعد کھولنے کا فیصلہ کیا ہے۔ محکمہ پنجاب زبان،فن اور ثقافت کی ترویج کے لئے راوالپنڈی اور ملتان میں FMریڈیو اسٹیشن بھی قائم کئے جا رہے ہیں۔سوال کے جواب میں پارلیمانی سیکرٹری نے بتایا کہ حکومت پنجاب نے آرٹسٹ سپورٹ فنڈز کے اجرا مہم شروع کی ہے۔اس مہم کے تحت فنکاروں کی رجسٹریشن فہرستوں کی تکمیل سکرونٹی کے بعد 5000 روپے ماہانہ دئیے جائیں گے۔اجلاس کا ایجنڈے مکمل ہونے پر اجلاس 7 اگست بروز جمعہ دوپہر دو بجے تک ملتوی کر دیاگیا۔ مسلم لیگ ن نے پنجاب اسمبلی کا اجلاس 7 اگست تک ملتوی کرنے کے اقدام کوغیر آئینی قرار دے دیا۔گزشتہ روز اپوزیشن کے چیف وہب و ن لیگی رکن اسمبلی خلیل طاہر سندھو نے اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت قانون سازی میں بھی غیر آئینی رویہ اختیار کرتی رہی ہے۔ اسی طرح پنجاب اسمبلی کا اجلاس بھی کسی تعلقات عامہ ڈائریکٹر کے کہنے پر 7 اگست تک ملتوی کیا گیا ہے۔آئینی طور پر اجلاس دو دن سے پہلے ملتوی نہیں کیا جا سکتا ہے۔بصورت دیگر اس کا نیا نوٹیفکیشن جاری کیا جائے گا۔ حکومتی ارکان نے کہا کہ اجلاس سات اگست تک ملتوی کرنے میں کوئی رولز کی خلاف ورزی نہیں ہوئی۔ پارلیمانی سال کے 100 دن پور کرنے کیلئے اجلاس سات اگست تک ملتوی کیا گیا ہے۔

پنجاب اسمبلی اجلاس

مزید :

صفحہ اول -