محکمہ ایکسائز کے آن لائن سسٹم سے بھی مسائل حل نہ ہوس سکے، ایجنٹ مافیا اور افسر شاہی کا راج برقرار

      محکمہ ایکسائز کے آن لائن سسٹم سے بھی مسائل حل نہ ہوس سکے، ایجنٹ مافیا ...

  

لاہور(ارشد محمود گھمن)آن لائن سسٹم کے باوجود محکمہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن موٹررجسٹریشن اتھارٹی ریجن سی لاہور میں ایجنٹ مافیا اور افسر شاہی کا راج برقرار، افسران بالا نے من پسند 3انسپکٹرز کو ڈیوٹی پر مامور جبکہ19کو نظر اندازکردیا،4 ای ٹی او ز کوبھی ہفتہ میں ایک بار صرف دستخط کے لئے بلایاجانے لگا۔تفصیلات کے مطابق حکومت پنجاب نے نئے کوروناایس او پیز کے تحت ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن میں عوام کی سہولت کے لئے آن لائن سسٹم متعارف کروایا جس میں ہرشہری پہلے آن لائن ٹوکن حاصل کرے گا جس کے بعد وہ دفتر ہذامیں گاڑیوں کی رجسٹریشن اور ٹوکن ٹیکس اداکرسکے گا،ذرائع کے مطابق محکمہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن کے اعلیٰ افسران کی مبینہ ملی بھگت سے آن لائن سسٹم کوڈیوٹی پر مامور انسپکٹرزریاض،نذیربھٹی اور فرخ معاویہ جان بوجھ کر فلاپ کررہے ہیں،جس کے باعث آنے والے ہزاروں شہریوں کومشکلات کا سامنا ہے،وہ کئی گھنٹے انتظار کے بعد جب کاؤنٹر پر پہنچتے ہیں تو انہیں بتایا جاتاہے کہ سسٹم "بیٹھ "گیاہے لیکن جب یہ لوگ ایجنٹ مافیا سے رابطہ کرتے ہیں تو وہ بلاتاخیر ان کا کام کروادیتے ہیں،معلوم ہواہے کہ ایجنٹ حضرات ایک گاڑی کی رجسٹریشن کے عوض 5ہزار روپے جبکہ ٹوکن کے لئے2ہزار روپے فی کس وصول کررہے ہیں،ذرائع کے مطابق ڈائریکٹر ریجن سی رانا قمرالحسن کے پی اے شاہ رخ اور سٹینوگرافروقاص کو 4ماہ سے کورونا ایس او پیز کا بہانہ بنا کر گھر میں بٹھارکھاہے اور ان کی جگہ پر ایک انسپکٹرفرخ معاویہ ڈیوٹی دے رہاہے جبکہ19انسپکٹرز بھی کورونا ایس او پیز کی آڑ میں گھر بیٹھے تنخواہیں لے رہے ہیں، 4ای ٹی اوز ذکاء الرحمن، مہر عبدالرحمن،شیخ نعیم قادر اور ملک فیاض کوہفتہ میں ایک بار فائلوں پردستخط کرنے کے لئے دفتر بلایاجاتاہے۔

محکمہ ایکسائز

مزید :

صفحہ آخر -