امریکہ‘ اہم شہروں میں فوج کی تعیناتی بڑھانے پر احتجاج، ایک شخص ہلاک

  امریکہ‘ اہم شہروں میں فوج کی تعیناتی بڑھانے پر احتجاج، ایک شخص ہلاک

  

سیٹل(این این آئی) مرکزی شہروں میں ڈونلڈ ٹرمپ کے وفاقی ایجنٹس کے منصوبے کے تحت اضافے پر عوام کے غم و غصے کے اظہار کے دوران پورے امریکہ میں مظاہرین سڑکوں پر نکل آئے جبکہ ٹیکساس میں احتجاج کے دوران فائرنگ سے ایک شخص ہلاک ہوگیا۔ رپورٹ کے مطابق نسل پرستی اور پولیس کی بربریت کے خلاف مظاہرے۔امریکی ریاست ٹیکساس کے دارالحکومت آسٹن کے شہر کے وسطی علاقے میں ایک احتجاج کے دوران ایک شخص فائرنگ سے ہلاک ہوگیا۔مائیکل کیپوچیانو نامی ایک عینی شاہد نے آسٹن کے سرکاری اخبار کو بتایا کہ گاڑی نعرے لگاتے مظاہرین سے گھر گئی اور ایک شخص رائفل لے کر گاڑی کے قریب پہنچا۔ان کا کہنا تھا کہ اس کے بعد ڈرائیور نے کار کی کھڑکی سے بندوق نکالی اور کئی گولیاں چلائیں، رائفل سے اس شخص پر حملہ کیا اور گاڑی بھگادی۔پولیس نے بتایا کہ فائرنگ کرنے والا شخص زیر حراست ہے اور تفتیش کاروں کے ساتھ تعاون کر رہا ہے۔ سیئٹل میں پولیس نے پرتشدد مظاہروں کے دوران مظاہرین نے یوتھ ڈیٹنشن سہولت کی تعمیراتی سائٹ پر ایک ٹریلر کو نذرآتش کردیا جس کے بعد پولیس نے 45 افراد کو گرفتار کیا۔مظاہرین نے ٹریلر کے ٹائر پھاڑے اور اس کی کھڑکیاں توڑ دیں جس کے بعد پولیس ہنگامے کا اعلان کرنے اور مرچوں کے اسپرے اور آنسو گیس شیل کے ذریعے سڑکوں کو صاف کرنے پر مجبور ہوگئی۔

مظاہرے

مزید :

صفحہ آخر -