ڈسٹرکٹ گورنر ڈاکٹر فرحان عیسیٰ کاروٹری کلب آف کراچی ایونیو کا دورہ

  ڈسٹرکٹ گورنر ڈاکٹر فرحان عیسیٰ کاروٹری کلب آف کراچی ایونیو کا دورہ

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر) روٹری کلب آف کراچی ایونیو کے پریذیڈینٹ شیخ امتیاز حسین نے روٹری کلب انٹرنیشنل (3271)کے ڈسٹرکٹ گورنر پروفیسر ڈاکٹر فرحان عیسیٰ کو آفشل دورے کے موقع پر کلب کی سالانہ کارکردگی کی رپورٹ سے آگا ہ کیا جس میں معزر،نابینا افراد اورٹرانسجینڈرز کے لئے کئے جانے والے اقدامات اور راشن کی تقسیم سے متعلق معلومات فراہم کی دورے کے موقع پرسینئر وائس پریذیڈنٹ جنید الرحمان، وائس پریذیڈنٹ شازیہ متین،افشین عابد اور صدف فریال شاہ کے علاوہ عہدیداران اور ممبران بھی موجود تھے۔اس موقع پر ڈاکٹر فرحان عیسیٰ نے کہاکہ کورونا وائر س کی وجہ سے تھیلیسیمیا کے بچوں کو مشکلات کا سامنا کر نا پڑ رہا ہے کراچی سمیت پورے ملک میں لاتعداد بچے تھیلیسیمیا کے مرض کا شکار ہیں اگر انہیں ان کی ضرورت کے مطابق ہفتے میں ایک یا دو مرتبہ خون مہیا نہ کیا جائے تو ان کی جان کو خطرہ لاحق ہو جاتا ہے انہوں نے کہاکہ پاکستان میں کئی رفاعی ادارے تھیلیسیمیا کے بچوں کو خون کی فراہمی کے لئے دن رات مصروف ہیں ان میں عمیر ثناء فاؤنڈیشن،فاطمہ کڈنی کیئر ہسپتال،سیلانی ویلفیئر انٹرنیشنل ٹرسٹ،کاشف اقبال تھیلیسیمیا،افضال میموریل تھیلیسیمیا فاؤنڈیشن،ہیلپ انٹرنیشنل ویلفیئر ٹرسٹ اور دیگر کئی ادارے شامل ہیں۔پروفیسر ڈاکٹر فرحان عیسیٰ نے کہا کہ شادی سے قبل تھیلیسیمیا کا ٹیسٹ کرانے کا قانون موجود ہے مگر اس پر عملدرآمدنہیں کیا جا رہا جس سے تھیلیسیمیاکے مرض کو روکنے میں مشکلات کا سامنا ہے انہوں نے کہا کہ ایسے جوڑے جو رشتہ ازدواج میں میں منسلک ہو رہے ہوں اگر وہ تھیلیسیمیا کا ٹیسٹ شادی سے قبل کرا لیں تو اس سے تھیلیسیمیاکے مرض کو پھیلنے سے روکا جا سکتا ہے۔ انہوں نے روٹری کلب آف کراچی ایونیو بلائنڈ کی تعلیمی خدمات کو سراہتے ہوئے کہاکہ پاکستان میں تعلیم کی کمی اور غربت کی وجہ سے عام آدمی کو صحت کی سہولیات میسر نہیں ہیں جس کی وجہ سے ہر سال لاکھوں افراد ادویات نہ ملنے اور علاج نہ کرانے کی وجہ سے انتقال کرجاتے ہیں پروفیسر ڈاکٹر فرحان عیسیٰ نے کہاکہ خصوصاََ صوبہ سندھ میں سرکاری ہسپتالوں،ڈسپینسریوں اورصحت کے مراکز میں مریضوں کے علاج کے لئے بہترین سہولیات دستیاب نہیں ہیں کہیں ڈاکٹرز نہیں ہیں تو کہیں ادویات کی شدید قلت ہے اور کہیں آلات خراب پڑے ہیں انہوں نے کہاکہ کورونا وائرس کی وجہ سے مریضوں کی تعداد میں اضافہ سے ڈاکٹرزاور پیرا میڈیکل اسٹاف پرزیادہ دباؤ بڑھ گیا ہے چونکہ کورونا وائرس میں مبتلا مریضوں کے علاج اور دیکھ بھال پر ان کی توجہ زیادہ مرکوز ہے پروفیسر ڈاکٹر فرحان عیسیٰ نے کہا کہ موجودہ حالات میں عالمی وباء کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کے ٹیسٹ اور علاج پر حکومت بھر پور توجہ دے رہی ہے اورقرنطینہ سینٹر زقائم کر رہی ہے جبکہ ضرورت اس امر کی ہے کہ پاکستان میں صحت کے شعبے کو جدید خطوط پر استوار کیا جائے اور صحت کے بجٹ میں اضافہ کیا جائے

مزید :

صفحہ آخر -