صحت کامحکمہ تباہ ہو رہا ہے ،لیڈی ریڈنگ ہسپتال ہمارافخر تھالیکن اب اس کی حالت تباہ ہو چکی ہے ،پشاورہائیکورٹ ،ایم ڈی ایل آر ایچ کو ایک گھنٹے میں پیش ہونے کاحکم

صحت کامحکمہ تباہ ہو رہا ہے ،لیڈی ریڈنگ ہسپتال ہمارافخر تھالیکن اب اس کی حالت ...
صحت کامحکمہ تباہ ہو رہا ہے ،لیڈی ریڈنگ ہسپتال ہمارافخر تھالیکن اب اس کی حالت تباہ ہو چکی ہے ،پشاورہائیکورٹ ،ایم ڈی ایل آر ایچ کو ایک گھنٹے میں پیش ہونے کاحکم

  

پشاور(ڈیلی پاکستان آن لائن)پشاور ہائیکورٹ نے ایف سی پی ایس پروگرام پارٹ ٹو میں شامل نہ کرنے کیخلاف ڈاکٹرو ں کی درخواست پرایم ڈی ایل آر ایچ کو ایک گھنٹے میں پیش ہونے کاحکم دیدیا۔جسٹس قیصر رشید نے ریمارکس دیتے ہوئے کہاکہ صحت کامحکمہ تباہ ہو رہا ہے ،لیڈی ریڈنگ ہسپتال ہمارافخر تھالیکن اب اس کی حالت تباہ ہو چکی ہے ،ہمارے ملک کے صحت کے فیصلے سات سمندر پار سے ہو رہے ہیں ،ایک شخص اتنا طاقتورکیسے ہوگیا؟یہ کون ہے کسی کچھ پتہ ہے ۔

نجی ٹی وی کے مطابق پشاور ہائیکورٹ میں ایف سی پی ایس پروگرام پارٹ ٹو میں شامل نہ کرنے کیخلاف ڈاکٹرو ں کی درخواست پر سماعت ہوئی،سیکرٹری ہیلتھ ،ایڈووکیٹ جنرل اور اے اے جی سکندر حیات شاہ عدالت میں پیش ہوئے۔

جسٹس قیصر رشید نے کہاکہ صحت کامحکمہ تباہ ہو رہا ہے ،لیڈی ریڈنگ ہسپتال ہمارافخر تھالیکن اب اس کی حالت تباہ ہو چکی ہے ،ہمارے ملک کے صحت کے فیصلے سات سمندر پار سے ہو رہے ہیں ،ایک شخص اتنا طاقتورکیسے ہوگیا؟یہ کون ہے کسی کچھ پتہ ہے ۔

جسٹس قیصر شید نے کہاکہ سینئر ڈاکٹرز سرکاری ہسپتالوںکو چھوڑ کر جارہے ہیں،ایل آر ایچ کاایم ڈی صرف ڈاکٹر ہے ،پروفیسر نہیں یہ مضحکہ خیز بات ہے ۔

جسٹس قیصر رشید نے سیکرٹری ہیلتھ سے استفسارکیاکہ صحت کیلئے اس سال کتنا بجٹ رکھاگیا؟،سیکرٹری ہیلتھ نے جواب دیتے ہوئے کہاکہ صحت کیلئے 124 بلین روپے رکھے گئے ہیں،جسٹس قیصر رشید نے استفسار کیاکہ یہ پیسے کہاں خرچ کئے جارہے ہیں؟۔

عدالت نے حکم دیتے ہوئے کہاکہ صحت کابجٹ کہاں خرچ کیا جارہا ہے ،تفصیلات دیں ،عدالت نے ایم ڈی ایل آر ایچ کو ایک گھنٹے میں پیش ہونے کاحکم دیدیا۔

مزید :

قومی -علاقائی -خیبرپختون خواہ -پشاور -