پختون سرزمین پر ایک نئے جنگ وجدل کیلئے راہ ہموار کی جاچکی ہے،تنویر شہزاد 

پختون سرزمین پر ایک نئے جنگ وجدل کیلئے راہ ہموار کی جاچکی ہے،تنویر شہزاد 

  

صوابی(بیورورپورٹ) تحصیل بار ایسو سی ایشن لاہور کے صدر اور اے این پی کے رہنما تنویر شہزاد ایڈوکیٹ نے ایک تحریری بیان میں کہا ہے کہ پختون سرزمین (افغانستان ہو یا پاکستان) پر ایک نئے جنگ و جدل کے لئے راہ ہموار کی جا چکی ہے دہشتگردوں کو ایک بار پھر جمع کیا جارہا ہے یا ڈنکے کی چھوٹ پر انکی سہولت کاری کی رہی ہے۔یاد رہے کسی بھی ملک میں رہنے والے مختلف قوموں اور علاقوں کے مسائل کبھی بھی ایک جیسے نہیں ہوسکتے، لیکن ملکی مفادات کی تحفظ کا بہرحال مشرکہ احساس ہونا ضروری ہے۔ملکی مفادات کو ٹھیس پہنچنے سے ملک کے آسودہ حال اور مصائب ذدہ یکساں طور پر متاثر ہوتے ہیں۔ اسی حقیقت کے پیش نظر افغانستان اور پاکستان دونوں اطراف کے پختون مصائب ذدہ سہی لیکن اپنے اپنے ملکی مفادات کا لحاظ کرنا عدم تشدد پر کاربند پختونوں کی ترجیح رہی ہے۔یہی وجہ ہے کہ دہائیوں سے ہم پختون عملی طور پر اپنے ملکی مفادات کا تحفظ کرتے آرہے ہیں اور کرتے رہیں گے, لیکن کیا یہاں کے ارباب اختیار اور پالیسی سازوں کو ہماری قربانیوں اور مصائب کا کبھی بھی احساس تک ہوا ہے یا انہیں احساس ہونے کی کوئی توقع ہے ہمارا موقف انتہائی واضح اور روشن ہے کلمہ گو مسلمان خواتین، بچوں بزرگوں اور جوانوں کو سکول و کالج، بازار و جنازگاہ اور گھروں میں گھس کر اسلام کے نام پر قتل کرنا دین اسلام کی خدمت نہیں۔ انسانوں اور پھر مسلمانوں کو کو مارنا بے گھر کرنا خدا کا مذہب نہیں۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -