افغان طالبان کا 220اضلاع پر کنٹرول ، صورتحال بڑا چیلنج، کابل حکومت کی مدد کرینگے: نیٹو امریکہ 

افغان طالبان کا 220اضلاع پر کنٹرول ، صورتحال بڑا چیلنج، کابل حکومت کی مدد ...

  

 نیویارک،کابل،طالقان(نیوزایجنسیاں)نیٹو کے سیکرٹری جنرل جینز سٹولٹن برگ نے کہا ہے کہ افغانستان میں سکیورٹی کی صورتحال شدید چیلنج بنی ہوئی ہے۔ٹوئٹر پیغام میں نیٹو سیکریٹری جنرل نے کہاکہ انہیں صدر اشرف غنی سے بات کر کے اچھا لگا، افغانستان میں سیکیورٹی کی صورتحال ایک چیلنج بنی ہوئی ہے اور اس کیلئے بات چیت کا طے پانا ضروری ہے۔انہوں نے مزید تحریر کیا کہ نیٹو مالی اعانت سمیت اپنے سویلین اسٹاف کی موجودگی اور افغان افواج کی افغانستان سے باہر ٹریننگ کے ذریعے افغانستان کی حمایت جاری رکھے گا۔ادھر افغان امور کے نئے امریکی انچارج جنرل کینتھ میکنزی نے کابل میں پریس کانفرنس میں کہاہے کہ افغانستان میں طالبان نے 407 اضلاع میں سے 220 کا کنٹرول حاصل کرلیا۔ افغان فورسز کی درخواست پر طالبان کے خلاف بمباری تیز کردی گئی ہے جبکہ قندھار پر قبضے کیلیے افغان فوج اور طالبان میں شدید لڑائی جاری ہے۔  طالبان کا کہنا ہے کہ کابل اور صوبائی دارالحکومتوں کے قریب پہنچ گئے ہیں جبکہ افغان حکومت نے جھڑپوں کے دوران سیکڑوں طالبان کی ہلاکت دعوی کیا ہے۔ غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق ذرائع نے بتایا کہ  افغانستان میں طالبان کی پیش قدمی اور حملوں کی شدت کی وجہ سے افغان آرمی چیف جنرل ولی محمد احمد زئی نے اپنا دورہ بھارت ملتوی کیا۔افغانستان کے شمالی صوبہ تخار کے دارالحکومت طالقان میں طالبان جنگجوؤں کی جانب سے شہر پر قبضہ کرنے کی کوشش کو ناکام بنا دیا گیا ہے اور عسکریت پسند 28 لاشیں پیچھے چھوڑ کر فرار ہو گئے ہیں۔دریں اثنا تخار کے رہائشی افراد کی ایک بڑی تعداد نے گزشتہ ایک ہفتے سے کابل میں دھرنا دے رکھا ہے اور مرکزی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ تخار میں مزید فوجی بھیجے بصورت دیگر صوبائی دارالحکومت سمیت پورا صوبہ طالبان کے قبضے میں چلا جائے گا۔

افغانستان

مزید :

صفحہ اول -