کسی شہری کی گرفتاری پر امریکہ اس ملک کے قانون میں کبھی مداخلت نہیں کرتا 

کسی شہری کی گرفتاری پر امریکہ اس ملک کے قانون میں کبھی مداخلت نہیں کرتا 

  

 اسلام آباد(آئی این پی)امریکی سفارتخانے نے نورمقدم کیس کے حوالے سے کہاہے امریکہ کسی بھی ملک کے قانون پر مداخلت نہیں کرتااورکسی بیرونی ملک میں امریکی شہری اس ملک کے قوانین کے تابع ہو تے ہیں، جب امریکی شہریوں کو بیرون ملک گرفتار کیا جاتا ہے تو سفارت خانہ ان کی خیریت جانچ سکتا ہے اور وکلا کی ایک فہرست فراہم کرسکتا ہے، لیکن قانونی مشورے نہیں دے سکتا اورعدالتی کارروائی میں حصہ نہیں لے سکتا۔منگل کو پاکستان میں امریکی سفارتخانے کی جانب سے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹرپر نورمقدم کیس کے مرکزی ملزم ظاہر جعفر کے حوالے سے صارفین کی تنقید کے جواب میں کہا گیا کہ امریکہ کسی بھی ملک کے قانون پر مداخلت نہیں کرتااورکسی بیرونی ملک میں امریکی شہری اس ملک کے قوانین کے تابع ہوتے ہیں۔ امریکی سفارتخانے کی جانب سے مزید کہا گیا جب امریکی شہریوں کو بیرون ملک گرفتار کیا جاتا ہے تو سفارت خانہ ان کی خیریت جانچ سکتا ہے اور وکلا کی ایک فہرست فراہم کرسکتا ہے، لیکن قانونی مشورے نہیں دے سکتا اورعدالتی کارروائی میں حصہ نہیں لے سکتا۔ واضح رہے امریکی سفا ر تخانے کی جانب سے بیان پاکستانی نژاد امریکی ظاہر جعفر کے ہاتھوں سابق سفارتکار کی بیٹی نورمقدم کے قتل کے الزام میں گرفتار ی اور اس کو قانونی معاونت کی فراہمی کے تناظرمیں جاری کیاگیا۔ 

سفارتخانہ

مزید :

صفحہ اول -