بھارت، آسام، میز ورام کی سرحد پر تازہ جھڑپوں میں 6پولیس اہلکار ہلاک: 80سے زائد افراد زخمی 

بھارت، آسام، میز ورام کی سرحد پر تازہ جھڑپوں میں 6پولیس اہلکار ہلاک: 80سے زائد ...

  

  

  آسام، نئی دہلی(آئی این پی، این این آئی) بھارتی ریاست میزورام اور آسام کی سرحد پر جھڑپوں کے نتیجے میں 6 پولیس اہلکار ہلاک اور 80 سے زائد افراد زخمی ہوگئے۔ بھارتی میڈیا کے مطابق ریاست آسام اور میزورام کے درمیان جاری سرحدی تنازع کے باعث شروع ہونے والی جھڑپوں کے نتیجے میں 6 پولیس اہلکار ہلاک اور پولیس سپرنٹنڈنٹ سمیت 80 سے زائد افراد بھی زخمی ہوگئے جنہیں ہسپتال منتقل کردیا گیا ریاست میزورام کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ آسام پولیس نے پہلے سرحد عبور کی اور پولیس چیک پوسٹ پر قبضہ کیا جس کے بعد نیشنل ہائی وے پر گاڑیوں کو نقصان پہنچایا اور پولیس پر فائرنگ بھی کی دوسری جانب آسام کے وزیراعلی ہیمنتا بسوا سرما نے میزورام پولیس پر فائرنگ کا الزام لگاتے ہوئے کہا ہے کہ ہمارے پاس واضح ثبوت ہیں جس میں دیکھا جاسکتا ہے کہ میزورام پولیس نے لائٹ مشین گن سے فائرنگ کی تاہم یہ ایک  افسوسناک واقعہ ہے بھارتی وزیر داخلہ امت شاہ کی طرف سے دونوں صوبوں کے وزرائے اعلیٰ سے ملاقات اور ان سے دونوں صوبوں کے درمیان سرحد کو پر امن رکھنے کی اپیل کے دو دن بعد تازہ جھڑپوں میں یہ ہلاکتیں ہوئیں  دونوں وزرائے اعلیٰ نے اپنے ٹویٹس میں بھی جھگڑا کیا  اور اپنی پوسٹوں میں امیت شاہ کو ٹیگ کیا انہوں نے جھڑپوں کی ایک ویڈیو بھی پوسٹ کی جس میں لاٹھیاں اٹھائے ہوئے لوگوں کو دیکھا جاسکتا ہے۔ دونوں ریاستوں کے درمیان یہ تنازعہ طویل عرصے سے ہے۔آسام کے براک وادی کے ضلع کچھار،کریم گنج اور ہیلا کانڈیہ میزورم کے تین اضلاع آئیذول، کولاسب اور مامت کے ساتھ 164 کلومیٹر لمبی سرحد شیئر کرتے ہیں۔برسوں سے سرحد کے متنازعہ علاقوں میں جھڑپیں جاری ہیں۔ آسام کے میگھالیہ اور اروناچل پردیش کے ساتھ بھی سرحدی تنازعات ہیں۔ 

بھارت جھڑپیں 

مزید :

صفحہ آخر -