محکمہ صحت میں بوگس بھرتیاں، ملازمین کوہراساں کرنے کا انکشاف

  محکمہ صحت میں بوگس بھرتیاں، ملازمین کوہراساں کرنے کا انکشاف

  

  ملتان (وقا ئع نگار)محکمہ صحت ملتان میں بوگس بھرتیوں سمیت دیگر الزامات کے معاملہ پر۔ڈپٹی ڈائریکٹر انوسٹی گیشن  اینٹی کرپشن  نے جان بوجھ کر بھرتی شدہ ملازمین کو ہراساں کرنا شروع کردیا ۔زبردستی ہیلتھ افسران کے خلاف تحریری بیان لکھوانے کی کوشش بے کار ہوئی۔جبکہ محکمہ صحت ملازمین نے تنگ آکر  اعلی حکام سے نوٹس لینے کا مطالبہ کردیا۔ معلوم ہوا (بقیہ نمبر41صفحہ7پر)

ہے اینٹی کرپشن ملتان  ڈپٹی ڈائریکٹر انوسٹی گیشن عامر چیمہ کے پاس محکمہ صحت میں ہونے والی بھرتیوں اور دیگر الزامات کے تحت انکوائری کر رہے ہیں۔ذرائع کے مطابق گزشتہ روز محکمہ صحت ملتان میں بھرتی ہونے والے  ملازمین سے ڈپٹی ڈائریکٹر عامر چیمہ انکو نوکری سے نکلوانے کا خوف دلوا کر زبردستی ہیلتھ انتظامیہ کے خلاف تحریری بیان لینے کی کوشش کی۔تو ملازمین نے صاف انکار کردیا۔جس پر انکوائری افسر آگ بگولہ ہوگئے ہتک آمیز رویہ اختیار کیا۔اور ہراساں کیا۔ملازمین نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ موصوف ڈپٹی ڈائریکٹر ہم سے زبردستی لاکھوں روپے رشوت دینے کا الزام لگوانا چاہ رہے۔جو کہ انکا غیر قانونی عمل ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ جس بندے نے محکمہ صحت کے خلاف درخواست دی ہے۔اسکی خود کی انکوائری اینٹی کرپشن میں چل رہی ہے۔جس  پر الزام ہے کہ اسکی اپنی  بھرتی بوگس ہے۔ اور اسی وجہ سے اسکو نوکری سے سابق سی ای او ہیلتھ ڈاکٹر منور عباس نے  برخاست کیا گیا تھا۔جس کے رنج میں وہ محکمہ صحت افسران کے خلاف درخواست بازی کر رہا ہے۔جبکہ دوسری جانب  بھرتی شدہ ملازمین نے وزیر اعلی پنجاب سمیت دیگر اعلی حکام سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

محکمہ صحت

مزید :

ملتان صفحہ آخر -